برطانیہ میں نو بریگزیٹ ڈیل کا امکان بڑھ گیا

يورپي يونين سے برطانيہ کي عليحدگي کے حوالے سے برطانوی پارليمنٹ ميں 5 بل مسترد، جب کہ 2 منظور کرليے گئے۔ بغیر ڈیل کیے بریگزٹ پر پابندی سے متعلق جریمی کاربن کا ترمیمی بل بھی مسترد ہوگیا۔ پہلی ترمیم کی مخالفت میں 327 اور حمایت میں 296 ووٹ ڈالے گئے۔ وزيراعظم ٹريزامے نے بريگزٹ پر يورپ سے دوبارہ مذاکرات کي اميد ظاہر کردي۔

برطانوي پارليمنٹ ميں بريگزٹ معاہدے سے متعلق ايک کے بعد ايک پانچ ترميمي بل مسترد ہوتے چلے گئے۔ پہلی ترمیم کی مخالفت میں 327 اور حمایت میں 296 ووٹ ڈالے گئے۔ دوسری اور تيسري ترمیم بھي نامنظور ہوئي۔ بریگزیٹ کو مؤخر کرنے سے متعلق چوتھے ترمیم کی مخالفت میں321 اور حمایت میں 298 ووٹ ڈالے گئے۔

پانچویں ترمیم بھی 290 کے مقابلے میں 322 ووٹوں سے مسترد ہوگئی۔ ڈیل کے بغیر یورپی یونین سے نہ نکلنے کا ترمیمی بل منظور ہوا اور چھٹا ترمیمی بل 310 کے مقابلے میں 318 ووٹوں سے کامياب ہوا۔

يورپي يونين سے عليحدگي کا ساتواں ترمیمی بل301 کےمقابلےمیں317 ووٹوں سے کامياب رہا۔ وزيراعظم ٹريزامے نے يورپ سے دوبارہ مذاکرات کي اميد ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب واضح ہوگیا ڈیل کے ساتھ یورپی یونین سے علیحدگی کا راستہ موجود ہے، جس پر جيرمي کوربن نے ٹريزامے سے ملاقات کي حمايت ظاہر کي۔

برطانوي ميڈيا کے مطابق نو ڈیل بریگزٹ کے امکانات بڑھ گئے ہيں۔ فی الحال ارکان سے نظر ثانی شدہ ڈیل کی منظوری نہیں لی جائے گی۔

EUROPEAN UNION

BREXIT

PM Theresa May

UK Parliament

Tabool ads will show in this div