نیب ریفرنسز، نواز شریف کی اپیل پر قومی احتساب بیورو سے جواب طلب

اسلام آباد ہائیکورٹ نے العزیزیہ ریفرنس فیصلے کیخلاف نواز شریف کی اپیل اور سزا معطلی کی درخواست پر نیب سے جواب طلب کرلیا، مجرم کی سزا 7 سے بڑھا کر 14 سال کرنے کی نیب کی اپیل پر میاں صاحب کو بھی نوٹس جاری کردیا، فلیگ شپ ریفرنس میں بریت معاملے پر نیب سے کیس کا سارا ریکارڈ مانگ لیا گیا۔

کوٹ لکھپت کے قیدی میاں صاحب کو فوری ریلیف کا امکان نہیں، اسلام آباد ہائیکورٹ میں نواز شریف اور نیب کی اپیلوں پر ابتدائی سماعت کے بعد کارروائی 3 ہفتے کیلئے ملتوی کردی گئی۔

عدالت عالیہ نے میاں صاحب کی اپیل اور سزا معطلی کی درخواست پر نیب سے جواب طلب کرلیا، جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز میں احتساب عدالت کے فیصلے کیخلاف اپیلوں پر سماعت کی۔

نواز شریف کی جانب سے اضافی ریکارڈ جمع کرانے کی درخوست منظور کرلی گئی، سزا معطلی کی درخواست جلد سنی جائے، میاں صاحب کے وکیل کی عدالت سے استدعا کردی۔

عدالت نے قرار دیا آپ مکمل ریکارڈ لائیں پھر اپیل اور سزا معطلی کو ایک ساتھ دیکھا جائے گا۔

العزیزیہ ریفرنس میں سزا بڑھانے کیلئے نیب کی اپیل پر نواز شریف کو نوٹس جاری کردیا گیا۔ نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے ہل میٹل سے مالی فوائد کو تسلیم کر رکھا ہے۔

عدالت عالیہ نے فلیگ شپ ریفرنس میں نیب سے مقدمے کا مکمل ریکارڈ طلب کر لیا۔ جسٹس عامر فاروق نے کہا ریکارڈ سامنے آجائے پھر نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ ہوگا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عدالت نے سماعت ملتوی کرتے ہوئے رجسٹرار آفس کو 3 ہفتے تک اپیلوں کو دوبارہ سماعت کیلئے مقرر کرنے کا حکم دے دیا۔

AVENFIELD

Alazizia

Tabool ads will show in this div