پشاور میں ہندووں کی قدیم مذہبی عبادت گاہ ایک بار پھر متنازعہ بن گئی

 حکومت کی جانب سے پنج تیرتھ کو قومی ورثہ بنانے کے اعلان کے بعد ہندوں پنچائیت راچپوت ویلیفیئر سوسائٹی نے مندر اور اس سے ملحقہ 14 کنال کی اراضی کو ان کے حوالے کا مطالبہ کردیا۔

حکومت خیبر پختونخوا نے چند روز قبل ہندووں کی قدیم مذہبی عبادت گاہ پنچ تیرتھ مندر کو قومی ورثہ قرار دینے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد ہندوں راجپوت زات کی پنچائیت نے مذکورہ مندر اور اس سے ملحقہ 14 کنال اراضی کو ان کے حوالہ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

پنچائیت میں شریک ہندوں راجپوت زات کے رہنماوں کا کہنا تھا کہ جب سے پاکستان بنا ہے تب سے ان کے قبیلے کےلئے پشاور میں کوئی عبادت گاہ موجود نہیں اس لئے وہ برسوں سے اپنے گھروں میں پوجا کررہے ہیں، جبکہ اس کے برعکس دیگر ہندووں کے لئے مخلتف مقامات پر الگ الگ مندر موجود ہیں جہاں وہ تمام مذہبی تہوار مل کرآزادی کے ساتھ منا سکتے ہیں۔

پشاورہندو پنچائیت راچپوت ویلیفیلئر سوسائٹی کے ترجمان وکرم کا کہنا ہے کہ پنچ تیرتھ ان کا تاریخی مذہبی مقام ہے جہاں پر ان کے آباو آجاد پوجا کیا کرتے تھے۔

سماء ڈیجیٹل سے بات کرتے ان کا  کہناتھا کہ پنج تیرتھ 14 کنال زمین پر محیط ہے اس مقام پر پاکستان بننے سے قبل 5 مندر اور پانچ کنویں موجود تھے جہاں پوجا سے قبل اشنان(غسل) کیا جاتا تھا

لیکن اب اس زمین پر ایک حصے میں چیمبر آف کامرس کی بلند عمارت کھڑی کی گئی ہے تو  دوسرے حصے میں فیملی پارک بنایا گیا ہے۔اسی طرح باقی رہ جانے والی اراضی پرایک مقامی شخص نے قبضہ کیا ہےجس کے باعث تین مندر خستہ حالی سے گرکر ختم ہوگئے ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ان کی تنظیم گزشتہ چار سالوں سے اس زمین کے حصول کے لئے سرگرم ہے اور اس سلسلے میں ایک طرف ان کا محکمہ اوقاف کے ساتھ مزاکرات اور خط وکتابت جاری ہے تو دوسری جانب متعدد بار انہوں نے حکمرانوں کو بھی اس مسلے کے حل کےلئےدرخواستیں ارسال کی ہیں۔

وکرم کا کہنا ہے کہ پاکستان میں انہیں ہر طرح کی آزادی حاصل ہے اور یہاں تمام حکومتوں نے ان کے ساتھ ہر معاملے میں تعاون کیا ہے جبکہ یہاں کے مسلمانوں نےبھی کبھی انہیں خود سے الگ نہیں سمجھا اس لئے آج تک انہیں اقلیت ہونے کا احساس تک نہیں ہوا لیکن یہاں اگر انہیں کوئی کمی ہے تو وہ یہ ہے کہ ان کے لئے کوئی ایسی جگہ نہیں جہاں ان کا قبیلہ ایک ساتھ مذہبی تہوار کو منا سکیں اور پوجا کرسکیں۔

پنچائیت میں شریک راجپوت قبیلے کے سربراہوں نے حکومت سے مذکورہ تمام زمین کو اداروں اور مقامی شخص کے قبضے سے واگزار کروانے اور تمام اراضی کو فوری طور پر ان کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا۔

religious freedom

pishawar

hindu temple

Tabool ads will show in this div