سابق وفاقی وزیرارباب عالمگیراوراہلیہ عاصمہ عالمگیرپرفرد جرم عائد

احتساب عدالت نے آمدنی سے زائد اثاثوں کے الزام میں پاکستان پيپلزپارٹي کے رہنما اورسابق وفاقی وزیرمواصلات ارباب عالمگيراور ان کی اہلیہ عاصمہ عالمگير پرفرد جرم عائد کردی۔ میاں بیوی نے صحت جرم سے انکارکردیا۔ عاصمہ عالمگیر کہتی ہیں ثابت ہوگیا حکومت اور نیب کا گٹھ جوڑ ہے۔

احتساب عدالت کے جج محمد اشتیاق نے ارباب عالمگیر اور عاصمہ عالمگیر کے خلاف نیب خیبرپختونخوا کی جانب سے دائرکردہ 33 کروڑ 21 لاکھ روپے کے ریفرنس سےمتعلق سماعت کی۔

میاں بیوی پشاورميں نيب عدالت کے روبروپيش ہوئے جہاں دوران سماعت ان پرفرد جرم عائدکردي گئي ۔ دونوں نےصحت جرم سے انکار کردیا۔ عدالت نے استغاثہ کے 4 گواہان کو 24جنوری کو طلب کرلیا ہے۔

نیب کی جانب سے دائر کردہ ریفرنس کے مطابق عاصمہ عالمگیر اور ارباب عالمگیر نے سال 2008 سے 2013 کے دوران آمدن سے ذائد اثاثے بنائے جن میں اسلام آباد میں کروڑوں روپے مالیت کا مکان،7 کروڑ سے زائد پرائزبانڈز بھی شامل ہیں۔

فردجرم عائد کیے جانے کے بعد عاصمہ عالمگیر نے احتساب عدالت کے باہرمیڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہاکہ حکومت میں موجود کرپٹ عناصر پرنیب مہربان کیوں ہیں؟عوام جواب مانگ رہے ہیں۔ ہمارے خلاف من گھڑت کیس کو ریفرنس کیلئے منظور کردیا گیا جبکہ اسپیکر پنجاب اسمبلی کے ایل ڈی اے کیس کو ختم کردیا گیا۔

عاصمہ عالمگیر نے چیلنج کیا کہ اگر میں ایک خاتون ہو کر خود احتساب کیلئے عدالت سے رجوع کر سکتی ہوں تو انصاف کی چھتری تلے چھپے ہوئے وزیر اعلیٰ محمود خان اور وزیر دفاع پرویز خٹک خود احتسابی کیلئے عدالت سے رجوع کیوں نہیں کرسکتے۔اگر دونوں کے دامن صاف ہیں تو ہمت کرکے عدالت سے رجوع کریں۔

پيشي کے موقع پرپيپلزپارٹي کے کارکنوں کي ہلڑبازي کے باعث سکيورٹي انتظامات دھرے کے دھرے رہ گئے ۔ کارکنوں کی جانب سےعدالت کے اندر داخلے کی کوشش پرپولیس اہلکاروں سے تلخ کلامی بھی ہوئی۔

ARBAB ALAMGIR

Accountibility court

alamgir

nab reference

Tabool ads will show in this div