زیرالتو مقدمات نمٹانا اولین ترجیح ہے، مفاد عامہ کے معاملے پرازخود نوٹس کی پالیسی جاری ہے۔ چیف جسٹس

اسٹاف رپورٹ


اسلام آباد : چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی نے کہا ہے کہ زیرالتو مقدمات نمٹانا اولین ترجیح ہے،مفاد عامہ کے معاملے پر ازخود نوٹس کی پالیسی جاری ہے۔


سپریم کورٹ کے فل کورٹ اجلاس سے خطاب میں چیف جسٹس نے کہا کہ آئینی امور اپنی جگہ اہم ہیں لیکن ان کی اولین ترجیح زیر التوا مقدمات کو جلد نمٹانا ہے۔


 انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے اٹھائیس دن میں ایک ہزار نو سو پچاس مقدمات نمٹائے ہیں جبکہ اس دوران ایک ہزار چھ سو اکتالیس  نئے مقدمات دائر ہوئے ہیں۔


 انہوں نے کہا کہ مفاد عامہ کے معاملے پر ازخود نوٹس کی پالیسی جاری ہے جبکہ سپریم کورٹ کا انسانی حقوق سیل ماضی کی طرح پورے جوش و خروش سے کام جاری رکھے گا۔


 فل کورٹ اجلاس میں سپریم کورٹ کے اسلام آباد میں موجود تمام ججز نے شرکت کی۔ فل کورٹ اجلاس نے اپریل میں عالمی جوڈیشل کانفرنس کے انعقاد کی منظوری دیدی۔ اس سلسلے میں سپریم کورٹ کے پانچ سینئر ترین ججوں پر مشتمل انتظامی کمیٹی بھی قائم کر دی گئی ہے۔ سماء

کی

کے

چیف

جاری

pacific

boys

Tabool ads will show in this div