اقتصادی سروے جاری، حکومت کا مہنگائی میں کمی کا دعویٰ

ویب ایڈیٹر

اسلا آباد : وزیر خزانہ نے مہنگائی میں کمی کا دعویٰ کردیا، اسحاق ڈار کہتے ہیں حکومت کی مانیٹری پالیسی کامیاب رہی، زرمبادلہ ذخائر اور فی کس آمدنی میں اضافہ ہوا، دہشت گردی کیخلاف جنگ کے باعث رواں سال معیشت کو 4 ارب ڈالر کا نقصان اٹھانا پڑا۔

وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے مالی سال 15-2014 کی اقتصادی جائزہ رپورٹ پیش کردی، اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران ان کا کہنا تھا حکومت کی مانیٹری پالیسی کامیاب رہی، روپے کی قدر میں اضافے سے مہنگائی کم ہوئی، شرح کو ایک ہندسے تک محدود رکھا، جو 7.51 سے 4.65 ہوگئی، 10 ماہ کے دوران افراط زر کی شرح 4.8 فیصد رہی، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ گزشتہ سال سے کم ہوا۔

انہوں نے بتایا کہ اقتدار سنبھالا تو کراچی اسٹاک ایکس چینج کا انڈیکس 19 پوائنٹس ہزار پر تھا،  جو اب 34 ہزار پوائنٹس تک پہنچ گیا ہے، 2 سال کے دوران کے ایس ای میں 70 فیصد اضافہ ہوا، شیئر بازار میں رجسٹرڈ کمپنیوں کی تعداد 4 ہزار 100 تک ہوچکی ہے، توقع یہی ہے کہ بجٹ خسارہ ہدف کے مطابق رہے گا، مالی سال کے 27 دن باقی ہیں، معمولی فرق معاف کردیجئے گا، مہنگائی میں کمی سے وصولیوں کا ہدف بھی متاثر ہوتا ہے۔

اسحاق ڈار کہتے ہیں کہ 15 سال میں دہشتگردی کے خلاف جنگ کے باعث 107 ارب ڈالر جبکہ رواں سال معیشت کو 4 ارب ڈالر کا نقصان اٹھانا پڑا، پاک چین راہداری کا معیشت پر مثبت اثر پڑے گا، رواں سال برآمدات کا حجم 20 ارب 18 کروڑ ڈالر رہا، شرح نمو 4.2 فیصد جبکہ زرمبادلہ ذخائر 16 ارب 73 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئے ہیں۔

وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ فی کس آمدنی 1384 سے بڑھ کر 1513 ڈالر ہوگئی، شرح سود 7 فیصد پر آگئی، نجی قرضے 371 سے 162 بلین پر آگئے جو تسلی بخش نہیں، غربت مٹانے کیلئے 97 بلین روپے مختص کئے جائیں گے، انکم سپورٹ پروگرام کے تحت 50 لاکھ خاندان 3 کروڑ لوگ مستفید ہوں گے، وظیفہ 12 ہزار سے بڑھا کر 18 ہزار کردیا۔

اقتصاری سروے کے مطابق اسٹیٹ بینک سے قرضوں میں 532 ارب روپے کی کمی ہوئی، ٹیکس کے اسٹرکچر کو آسان بنائیں گے، سروسز سیکٹر میں 4.95 فیصد اضافہ ہوا، ایگزیکٹ کیخلاف کارروائی ریاستی اداروں کی ذمہ داری تھی، ادارے کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جارہی ہے۔ سماء

Video

planet

jirga

typhoon

Tabool ads will show in this div