بلوچستان کا دوکھرب تینتالیس ارب سےزائدحجم کابجٹ پیش کردیا گیا

Feb 24, 2016

اسٹاف رپورٹ:


کوئٹہ : بلوچستان کے آئندہ مالی سال کا دو کھرب تینتالیس ارب سے زائد حجم کا بجٹ پیش کردیا گیا۔ بجٹ میں تنخواوں اور پینشن میں ساڑھے سات فیصد اضافہ تجویز کیا گیا ہے۔ اپوزیشن جماعتوں نے نظر انداز کیے جانے پر بجٹ اجلاس کا بائیکاٹ کیا۔

بلوچستان کی مخلوط حکومت کا تیسرا بجٹ وزیراعلیٰ کے مشیر برائے خزانہ خالد لانگو نے پیش کیا۔ دو کھرب تینتالیس ارب روپے کے بجٹ میں 26 ارب روپے خسارہ ظاہرکیا گیا۔ غیرترقیاتی بجٹ کے لیے ایک کھرب اننانوے ارب جبکہ ترقیاتی پروگرام کے لئے چون ارب روپے مختص کئے گئے۔

محکمہ صحت کے لیے پندرہ ارب جبکہ ثقافت ، کھیل اور مذہبی امور کیلئے چار ارب انیس کروڑ مختص کئے گئے ہیں، تعلیم پر اڑتیس ارب روپے سے زائد خرچ ہوں گے، اپوزیشن جماعتوں نے بجٹ کی تشکیل میں اعتماد میں نہ لینے پر بجٹ اجلاس کا بائیکاٹ کردیا۔

بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پینشن میں ساڑھے سات فیصد اضافے اور پانچ ہزار نئی آسامیوں کو بھی اعلان کیا گیا۔ نئے مالی سال میں بھی لگژری گاڑیوں اور سرکاری خرچے پر بیرون ملک علاج و معالجے پر پابندی برقرار رہے گی۔ سماء

BALUCHISTAN

Tabool ads will show in this div