نواز شریف کوٹ لکھپت جیل منتقل، عدالتی فیصلے کیخلاف اپیل کی جائے گی

Dec 25, 2018
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/NS-Shifting-And-Appeals-Isb-Pkg-25-12.mp4"][/video]

العزیزیہ ریفرنس میں 7 سال قید کی سزا پانے والے نوازشريف نے قید کی پہلی رات اڈیالہ جیل میں گزاری ، صبح جیل کے باہر ان کی سالگرہ کا کیک کاٹا گیا۔ سابق وزيراعظم کو راولپنڈی سے کوٹ لکھپت جیل لاہورمنتقل کر دیا گیا۔ فریقین نے احتساب عدالت کا فیصلہ چیلنج کرنے کی تیاری شروع کر دی۔

نواز شریف نے اپنی 69 ویں سالگرہ جیل میں منائی۔میاں صاحب نے سات سال سزائے قید کی پہلی رات اڈیالہ جیل میں گزاری۔ 25 دسمبر کو ان کی سالگرہ ہوتی ہے تو صبح ہوتے ہی کارکن اظہار یکجہتی کیلئے اڈیالہ جیل کے باہر پہنچ گئے۔ متوالوں نے قائد کی سالگرہ کا کیٹ کاٹااور خوب نعرے بازی بھی کی۔

احتساب عدالت نے نواز شریف کی کوٹ لکھپت جیل لاہور منتقلی کی روبکار جاری کر دی جس کے بعد عدالتی حکم پر میاں صاحب کو اڈیالہ جیل سے لاہورمنتقل کردیا گیا۔

اڈیالہ سےانہیں سخت سیکیورٹی میں بے نظیر بھٹو ائر پورٹ پہنچایا گیاجہاں سے نیب حکام خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور لیکر گئے۔قائدن لیگ اپنی باقی سزا کوٹ لکھپت جیل میں کاٹیں گے۔

نواز شریف کو العزیزیہ ریفرنس میں 7 سال قید ، بھاری جرمانہ، جائیداد ضبطگی کا حکم

دوسری جانب فریقین نے احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف اپیلیں دائر کرنے کی تیاریاں شروع کر دی ہیں ۔ نواز شریف کے وکلاء اور نیب حکام نے مقدمے کا تصدیق شدہ ریکارڈ حاصل کر لیا۔

میاں صاحب العزیزیہ ریفرنس میں سزا کے خلاف اپیل دائر کریں گے جبکہ نیب فلیگ شپ ریفرنس میں اُن کی بریت کو چیلنج کرے گا۔ دونوں فریقین دس روز کے اندر ہائی کورٹ سے رجوع کر سکتے ہیں۔

 

ADYALA JAIL

KOT LAKHPAT JAIL

NAB references

Nawaz Sharif's Birthday

Tabool ads will show in this div