نیب ریفرنسز: مختلف مواقع پر نواز شریف کے یو ٹرن

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/SM20NS20U20TURNS20090020PKG2023-1220ZAKI1.mp4"][/video]

احتساب عدالت آج سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس کا فیصلہ آج سنائے گی۔نيب ريفرنسز کي سماعت کے دوران نواز شریف کے بیانات میں تضاد رہا۔ مختلف سماعتوں کے دوران نواز شریف کبھي اسمبلي ميں پيش کردہ ذرائع سے مکرے تو کبھي قطري خط سے انکار کيا۔

گزشتہ ماہ کے آخري ہفتے ميں پيشي کے دوران سابق وزيراعظم اسمبلي ميں پيش کردہ ذرائع سےنہ صرف مکر گئے بلکہ قومي اسمبلي کي تقرير پر عدالت سے استثنیٰ بھي مانگ ليا۔

نوازشريف ماضي ميں خود پر بننے والے ايون فيلڈر ريفرنس کا ذمہ دار مشرف کو ٹھہراتے رہے، ليکن عدالت کے روبرو مشرف کا نام تک نہ ليا بلکہ يوٹرن ليکر بيان ميں کہا کہ ریفرنس مخالفین کے الزامات پر بنا۔

پاکستانيوں نے نوازشريف کے منہ سے ماضي ميں خلائي مخلوق کا تذکرہ بھي بہت سُنا ۔ليکن العزیزیہ ریفرنس کي سماعت ميں مياں صاحب نے خلائی مخلوق کا ذکر کيا نہ اور ہي ایسے کسي اعتراض کو دُہرایا۔

پارلیمان میں تقریر ہو يا نیب میں بیان، ہرموقع پر مياں صاحب نے قطري خط کا ذکر باربار کیا ليکن اب کہتے ہيں قطری خط سے کوئی لینا دینا نہیں۔

مياں صاحب نے يکے بعد ديگرے یوٹرن پر يوٹرن ليکر خود کو بچانے کي کوشش کي ہے لیکن نتیجہ قید، جرمانے اور جائیداد کی ضبطگی کی صورت میں نکلے گا یا انہیں بریت مل جائے گی۔ یہ فیصلہ احتساب عدالت نے سنانا ہے۔

 

Accountibility court

NAB references

flagship reference

Al azizia reference

Nawaz Sharif U turn

Tabool ads will show in this div