العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز کا فیصلہ نواز شریف عدالت میں سنیں گے

سابق وزیراعظم نواز شریف العزيزيہ اور فليگ شپ ريفرنسز کا فيصلہ سننے کل پیر 23 دسمبر کو احتساب عدالت جائیں گے۔


احتساب عدالت نے 19 دسمبر کو العزيزيہ اور فليگ شپ ريفرنسز کا فيصلہ محفوظ کیا تھا۔

فیصلے سے ایک دن قبل نواز شریف  نے منسٹر انکلیو اسلام آباد میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے تقریبا دو گھنٹے ملاقات کی۔ اس موقع پر خاندان کے افراد اور کچھ لیگی رہنما بھی موجود تھے۔

ملاقات میں احتساب عدالت کے متوقع فیصلے کے تمام پہلوں پر تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ اس حوالے سے آئندہ کی حکمت عملی بھی تیار کرلی گئی۔

نوازشریف کو سزا کی صورت میں مسلم لیگ ن کی حکمتِ عملی تیار

شہباز شریف کی صحت کے مسائل اور پی اے سی کی سربراہی ملنے پر بھی بات ہوئی جبکہ بیٹھک کے بعد نواز شریف منسٹرز انکلیؤ سے مری روانہ ہوگئے۔

اکیس دسمبر کو مسلم لیگ ن نے نواز شریف کو سزا کی صورت میں پارٹی امور چلانے کے لیے پارلیمانی ایڈوائزری کونسل بنانے کا فیصلہ کیا تھا جبکہ پنجاب میں سوشل میڈیا سیل کی سربراہی عظمی بخاری کو دی تھی۔

کونسل کی قیادت کے لیے راجہ ظفر الحق، خواجہ آصف، احسن اقبال، پرویز رشید، مریم اورنگزیب اور رانا ثنااللہ کے ناموں پر غور کیا گیا جبکہ شاہد خاقان عباسی کو فیورٹ قرار دیا جا رہا ہے۔

court verdict

flagship reference

Al Azizia

Tabool ads will show in this div