Technology

سائبر کرائم میں ملوث لوگوں کو انٹرنیٹ کے ذریعے پکڑنے کا منصوبہ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

لاہور : سوشل ميڈيا کے ذريعے ہونیوالے جرائم کے خاتمے کیلئے ايف آئی اے کا سائبر کرائم ونگ سرگرم ہوگيا، انٹرنيٹ کے ذريعے واراداتيں کرنے والوں کو قانون کی گرفت میں لانے کیلئے انٹرنيٹ ہی کا سہارا ليا جارہا ہے۔

انٹرنيٹ کے ذريعے جرائم اور سوشل ميڈيا کے استعمال سے لوگوں کو لوٹنے کی خبريں تو عام تھيں ليکن اب قانون نافذ کرنے والے بھی انٹرنيٹ کا سہارا لے کر مجرموں کے گرد گھيرا تنگ کررہے ہيں۔

کسی بھی پچيدہ کيس ميں اگر ايک ملزم کا سراغ مل گيا تو سمجھيں پورے گينگ کو گرفتار کرنا کوئی مشکل نہيں، سوشل ميڈيا پر ملزم کے رابطوں کی باريکی سے جانچ پڑتال کی جاتی ہے اور کڑی سے کڑی ملاتے قانون کے ہاتھ ملزمان تک پہنچ جاتے ہيں۔

ٹيکنالوجی کے اس دور ميں سوشل ميڈيا پر ہونیوالی ڈيل ٹيلی فونک رابطوں کی نسبت زيادہ محفوظ سمجھی جاتی ہے، جرائم پيشہ گروہ مختلف ويب سائٹس پر غيرقانونی خريد و فروخت کرتے ہيں اور سائبرکرائم سيل کی پکڑ ميں آجاتے ہيں۔

ماہرين کے مطابق سائبر کرائم سے متعلق مزيد قانون سازی اور عوام کو آگاہی دے کر ٹيکنالوجی کے ذريعے ہونیوالے جرائم کی شرح کم کی جاسکتی ہے۔ سماء

Tabool ads will show in this div