ايمپريس مارکيٹ کراچی میں منشيات اور اسلحہ موجود تھا،وسیم اختر کا انکشاف

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/Waseem20Akhtar20Sot2020-121.mp4"][/video]

مئیرکراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ ايمپريس مارکيٹ کراچي کے اندر منشيات اور اسلحہ موجود تھا،فخر ہے کہ ایمپریس مارکیٹ کی دکانوں کو ختم کیا ہے۔

 کراچی چیمبر آف کامرس میں ایک تقریب سے خطاب کرتےہوئے وسیم اختر نے اہم انکشافات کئے۔ انھوں نے بتایا کہ صدر میں آپريشن صرف تجاوزات کي وجہ سے ہی نہيں کيا بلکہ مارکيٹ ميں منشيات فروش بھی موجود تھےجبکہ اسلحہ بھی موجود تھا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ جو چیزیں ہم نے دیکھی ہیں،وہ آپ سوچ بھی نہیں سکتے۔

تجاوزات کے زمرے میں آنے والے گھروں کو مسمارنہ کرنے کا فیصلہ

وسیم اختر نے بتایا کہ جو چیزیں اس بازار میں موجود تھیں وہ کراچی کو نقصان پہنچاتی تھیں۔ انھوں نے وضاحت دی کہ مارکیٹ کو مسمار کئے جانے پر صرف ایک زاویے سے نہ دیکھا جائے۔

empress market

MAYOR KARACHI

Saddar Town

operation against encroachment

Tabool ads will show in this div