روپے کی قدر میں کمی کیوں کی گئی، گورنر اسٹیٹ بینک کا انکشاف

Dec 19, 2018

ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں اچانک کمی کیوں آئی، گورنر اسٹیٹ بینک طارق باجوہ نے اس حوالے سے بڑا انکشاف کردیا۔ سینیٹ کی خزانہ کمیٹی کو بتایا کہ روپے کی قدر میں کمی حکومت کی مشاورت سے کی گئی۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس فاروق نائیک کی زیر صدارت آج بدھ کو ہوا ۔

کمیٹی چیئرمین اور ارکان نے روپے کی قدر میں کمی کے بارے میں وزیراعظم اور وزیر خزانہ کے بیانات میں حالیہ تضاد کا سوال اٹھایا تو وزیر خزانہ بولے کہ وزیراعظم اور ان میں کوئی تضاد نہیں، تاہم روپے کی قدر میں کمی کے حوالے سے میڈیا کی رپورٹنگ اور حقائق میں فرق ہے۔

مزید پڑھیے: ڈالرمزید مہنگا ہونے کا خدشہ

انہوں نے کہا اسٹیٹ بینک نے روپے کی قدر میں کمی کے بارے میں مطلع تو کر دیا تھا لیکن کتنی شرح سے ایڈجسٹمنٹ کی جائے گی اس بارے میں آگاہ نہیں کیا گیا تھا۔

گورنر اسٹیٹ بینک طارق باجوہ نے کمیٹی کو بتایا کہ دسمبر 2017 سے اب تک روپے کی قدر میں چھ بار ایڈجسٹمنٹ کی جا چکی ہے اور ہر بار ایڈجسٹمنٹ حکومتی مشاورت سے کی گئی۔

انہوں نے کہا ڈالر 134 سے بڑھ کر 143 روپے تک پہنچ گیا تاہم نصف گھنٹے بعد ہی 138 پرآ گیا۔

کمیٹی رکن شیری رحمان نے کہا کہ گورنر اسٹیٹ بینک نے واضح کر دیا کہ کرنسی کی قدر میں کمی حکومتی مشاورت سے کی گئی۔

وزیر خزانہ اسد عمر نے کمیٹی کو بتایا کہ وہ اس معاملے کی انکوائری کیلئے بھی تیار ہیں۔

ASAD UMAR

SENATE COMMITTEE

tariq bajwa

State Bank of Pakistan (sbp

Tabool ads will show in this div