ویڈیو: مری میں سیاح خاتون سے بدتمیزی کا ایک اور واقعہ

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/Murree-Hotel-Agent-Clash-16-12.mp4"][/video]

مری میں خاتون سیاح سے ہوٹل ايجنٹ کے جھگڑے کي ویڈیو سوشل ميڈيا پر وائرل ہوگئی۔ سیاح فیملی نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ مری پولیس شکایات درج نہیں کر رہی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لے لیا۔

مری ميں سياح خاتون سے ہوٹل ايجنٹ کی تلخ کلامي کے بعد جھگڑا ہاتھا پائی تک جا پہنچا۔ متاثرہ اہل خانہ نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم برفباری دیکھنے کیلئے مری آئے تھے، تاہم ہوٹل انتظامیہ نے ہمارے ساتھ جی پی او چوک میں مارپیٹ کی۔

عینی شاہدین کے مطابق ہوٹل ملازمین نے فیملی کی خواتین پر آوازیں کسیں تھیں، جس پر تلخ کلامی شروع ہوئی اور بڑھتے بڑھتے ہوٹل انتظامیہ نے سیاح خاندان کو دھکے دیئے۔

 

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ملزمان کو شناخت کرکے ایف آئی آر درج کرلی گئی ہے، جب کے ان کی تلاش جاری ہے۔

وزیراعلی پنجاب کا نوٹس

دوسری جانب وزيراعليٰ پنجاب عثمان بزدار نے فیملی کے ساتھ بدتمزی کا نوٹس لے ليا۔ متاثرہ فیملی سے تعاون نہ کرنے اور غفلت برتنے پر مری کے انچارج چوکی بازار اور محرر کو معطل کردیا گیا، جب کہ آئي جي کو واقعہ کي تحقيقات کا حکم دے دیا۔

مری کے دکاندار

مقامي دکانداروں کا کہنا ہے کہ کچھ عناصر ايسے کام کر کے سب کو بدنام کرتے ہيں، ايسے افراد کے خلاف سخت کارروائي کي جاني چاہيے۔ دکان داروں کا مزید کہنا تھا کہ ہر جگہ چھوٹے بڑے واقعات ہوتے رہتے ہيں، يہ لوگ مري کو بدنام کر رہے ہيں، جھگڑوں سے ہمارے کاروبار پر اثر پڑتا ہے، سيکيورٹي کيلئے مناسب انتظامات کيے جائيں۔

ڈولفن فورس

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ مری ميں بدمزگی کے واقعات پر قابو پانے کیلئے مری میں ڈولفن فورس بھی تعینات کی گئی تھی، تاہم اسے ستمبر کے آخر میں واپس بلا ليا گيا، جب کہ مری پولیس سیاحوں کو تحفظ فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہے ۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی مری میں سیاحوں کے ساتھ بدسلوکی کے واقعات کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں، جس کے بعد مری کے ہوٹلز کے بائیکاٹ کی مہم شروع ہوئی، جو کامیاب رہی اور عوام نے مری کا بائیکاٹ کیا۔

MURREE

Tabool ads will show in this div