پشتونخوا میپ کے سینئر رہنما سینیٹر سردار اعظم خان موسیٰ خیل انتقال کر گئے

Dec 15, 2018

پشتونخوامیپ کے ترجمان کے مطابق سردار محمد اعظم موسیٰ خیل عارضہ قلب کے باعث کراچی کے نجی ہسپتال میں زیر علاج تھے اور گزشتہ شب حرکت قلب بند ہونے کے باعث انتقال کر گئے۔

سردار اعظم موسیٰ خیل پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے دیرینہ کارکن تھے۔ اس وقت وہ پارٹی میں سینئر نائب صدر اور مرکزی کونسل کے رکن تھے۔ سردار اعظم موسیٰ خیل مارچ 2015ء میں  بلوچستان سے جنرل نشست پر سینیٹر منتخب ہوئے تھے۔ اس سے قبل وہ 2002ء سے 2008ء تک بلوچستان اسمبلی کے رکن بھی منتخب رہے۔

بحیثیت سینیٹر اور رکن صوبائی اسمبلی انہوں نے اپنے علاقے اور صوبے کے عوام کے حقوق اور مسائل پر متحرک انداز میں آواز اٹھائی۔  سردار محمد اعظم موسیٰ خیل سردار محمد یعقوب خان کے صاحبزادے اور سردار باز خان موسیٰ خیل کے پوتے تھے ۔ مرحوم موسیٰ خیل قبائل کے سردار تھے اور  قبائلی جرگوں میں ان کے فیصلوں کو اہمیت و قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا تھا۔

پشتونخوامیپ کے سینیٹر عثمان کاکڑ کے مطابق سینیٹر سردار محمد اعظم خان کا جسدِ خاکی بذریعہ ہوائی جہاز کراچی سے کوئٹہ اور پھر ایمبولنس کے ذریعے آبائی علاقے موسیٰ خیل میں واقع رہائشگاہ قلعہ سردار باز خان غڑیاسہ پہنچایا جائیگا۔ ان کی نماز جنازہ اتوار کی صبح گیارہ بجے ایف سی گراؤنڈ موسیٰ خیل میں ادا کی جائے گی جس کے بعد آبائی قبرستان میں تدفین ہوگی ۔

 نماز جنازہ میں شرکت کیلئےاسلام آباد، کراچی ، کوئٹہ سمیت صوبے اور ملک کے مختلف علاقوں سے بڑی تعداد میں پارٹی کارکنان اور قبائلی و سیاسی رہنماء موسیٰ خیل پہنچ رہے ہیں۔

وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے سینیٹر سردار محمد اعظم موسیٰ خیل کے انتقال پر افسوس کا اظہارکیا ہے۔ اپنے ایک بیان میں وزیراعلیٰ جام کمال کا کہنا تھا کہ مرحوم ایک سنجیدہ سینئر سیاستدان تھےجنہوں نے ہمیشہ اصولوں کی سیاست کی اور  ہر سطح پر صوبے کے حقوق کی بات کی۔ان کا کہنا تھا کہ سردار اعظم موسی خیل  کی وفات سے صوبہ ایک مخلص سیاستدان سے محروم ہو گیا ہے۔

 

CM Jam kamal

Tabool ads will show in this div