فلیگ شپ ریفرنس، حسن نواز کی لندن جائیداد سے متعلق نئی دستاویزات پیش

العزیزیہ کے بعد فلیگ شپ ریفرنس بھی حتمی مراحل میں داخل ہوگیا کیس میں خواجہ حارث نے حتمی دلائل کا آغاز کر دیا، نواز شریف نے حسن نواز کی لندن میں جائیداد سے متعلق نئی دستاویزات بھی پیش کر دیں ۔

احتساب عدالت میں نیب ریفرنسز کی سماعت ۔ میاں صاحب کی ایک اور پیشی ۔لندن میں حسن نواز کی تین کمپنیوں سے متعلق دستاویزات بھی عدالت کو دکھا دیں ۔ خواجہ حارث نے کہا باقی دستاویزات بھی آجائیں تو تصدیق شدہ کاپیاں جمع کروا دیں گے۔

فلیگ شپ ریفرنس میں خواجہ حارث کے حتمی دلائل بھی شروع ۔ کہا فرد جرم کے مطابق بھی حسن نواز 1989سے 1994تک نواز شریف کے زیر کفالت تھے، اس کے بعد کا کچھ نہیں لکھا ۔ فلیگ شپ 2001میں قائم ہوئی جبکہ نواز شریف کی کیپیٹل ایف زیڈ ای میں ملازمت 2006کی ہے، پانچ سال بعد ملازمت لینے والا مالک کیسے ہو سکتا ہے۔

خواجہ حارث نے صادق و امین سے متعلق بھی عدالتی سوال کا جواب دے دیا کہا نواز شریف کو سپریم کورٹ میں کوئی غلط دستاویزات پیش کرنے پر نا اہل نہیں کیا گیا وہ معاملہ اور تھا اس عدالت کے سامنے کیس اور ہے۔

سماعت پیر تک ملتوی کر دی گئی، خواجہ حارث آئندہ سماعت پر بھی دلائل جاری رکھیں گے۔

ACCOUNTABILITY

Nawaz Shariff

Tabool ads will show in this div