فرانس غیر محفوظ، پرتشدد مظاہرے،سیاحتی مقامات بند

Dec 08, 2018
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/12/Ki-Paris-Protest-08-12.mp4"][/video]

فرانس میں پٹروليم مصنوعات پراضافي ٹيکس کيخلاف احتجاج  کے باعث ایفل ٹاور سمیت دیگر تاریخی مقامات بند کرديئے گئے ۔ پوليس کے چاک و چوبند دستوں اور بکتربند گاڑيوں نے سيکيورٹی سنبھال لی۔

پيرس ميں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو متحرک کردیا گيا ہے۔حالات قابو میں رکھنے کے لیے ہزاروں اہلکار تعینات کرديے گئے۔ حکام نے شاہراہ شانزے لیزے پرموجود دکانیں اور مارکیٹیں بند کرا دیں جبکہ ایفل ٹاور اور دیگرتاریخی مقامات پہلے ہی بند کیے جاچکے ہیں۔

فرانس میں مظاہرین نےپیٹرولیم مصنوعات پرعائدٹیکس معطل کرنےکاحکم نامہ مستردکردیا

فرانسیسی حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس 6ماہ کے لیے معطل کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم مظاہرین نے پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ حکومت جب تک مطالبات حتمی طور پر نہیں مانتی احتجاج جاری رہے گا۔

Petroleum Levy

france protest

Tabool ads will show in this div