بلوچستان : اراکین اسمبلی کیخلاف انتخابی عذرداریوں پر فیصلہ محفوظ

کوئٹہ میں الیکشن ٹریبونلز نے 2 اراکین اسمبلی کیخلاف انتخابی عذرداریوں پر فیصلے محفوظ کر لئے جبکہ ایک درخواست پر دلائل مکمل کرلئے گئے۔

بلوچستان سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 260 پر کامیاب ہونے والے بلوچستان عوامی پارٹی کے نوابزادہ خالد مگسی کے خلاف پی ٹی آئی کے صوبائی صدر سردار یار محمد رند کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت جسٹس ہاشم کاکڑ کی سربراہی میں قائم الیکشن ٹریبونل نے کی، جس میں رکن قومی اسمبلی خالد مگسی اور سردار یار محمد رند کے وکیل پیش ہوئے، دوران سماعت نوابزادہ خالد مگسی کے بیان پر جرح کی گئی وکلاء کے دلائل کے بعد ٹریبونل نے فیصلہ محفوظ کر لیا۔

جسٹس ہاشم کاکڑ کے ٹریبونل میں ہی پی بی 24 سے کامیاب اے این پی کے رکن صوبائی اسمبلی  ملک نعیم بازئی کے خلاف دائر پشتونخوامیپ کے یوسف خان کی درخواست پر سماعت ہوئی، جس میں فریقین کے وکلاء پیش ہوئے، دوران سماعت وکلاء نے اپنے دلائل مکمل کر لئے جس پر عدالت نے محفوظ کر لیا۔

این اے 268 پر کامیاب بلوچستان عوامی پارٹی کے رکن قومی اسمبلی میر ہاشم نوتیزئی کیخلاف دائر درخواست کی سماعت جج عبداللہ بلوچ کی سربراہی میں قائم الیکشن ٹریبونل نے کی، سماعت میں رکن قومی اسمبلی میر ہاشم نوتیزئی اور درخواست گزار سردار فتح محمد حسنی کے وکیل پیش ہوئے، دوران سماعت ایم این اے ہاشم نوتیزئی کے بیان پر وکلاء نے جرح مکمل کرلی جبکہ حتمی بحث کیلئے سماعت کی تاریخ 7 دسمبر مقرر کردی گئی۔

PTI

election tribunal

BAP

sardar yar mohammad rind

Tabool ads will show in this div