سپریم کورٹ کا صنعتی مزدورں کو ورکرز ویلفیئرفنڈزسے17جنوری تک تمام ادائیگیوں کا حکم

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/11/SC-Remark-WWF-Case-Isb-Pkg-29-11-1.mp4"][/video]

سپریم کورٹ نے صنعتی مزدورں کو ورکرز ویلیفئر فنڈز سے 17 جنوری تک تمام ادائیگیاں کرنے کا حکم دیا ہے۔ جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ  کسی قسم کا غبن ہوا تو معاملہ نیب کو بھجوائیں گے۔وفاقی حکومت سے خوش نہیں، حکومت کے لوگ عدالت سے آدھا سچ بول رہے ہیں۔

صنعتی کارکنوں کو ورکرزویلفیئرفنڈ سے ادائیگیوں کے کیس کی سماعت کوئی۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل کی طرف سے جمع کرائی گئی رپورٹ پرعدالت برہم دکھائی دی۔

جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ حکومت کے لوگ عدالت سے آدھا سچ بول رہے ہیں، ایک شمال کی بات کرتا ہے دوسرا جنوب کی ۔اعتماد ختم ہو جائے پھر کچھ نہیں ہوسکتا، بیوروکریسی ہمارے کندھوں پر بندوقیں رکھ کرنہ چلائے، ہم وفاقی حکومت سے بالکل بھی خوش نہیں۔جسٹس عظمت نے سوال اٹھایا کہ آخرمسائل کا ذمہ دار کون ہے؟ آپ کو امانت دی جائے آپ لوگ گدھ بن کر بیٹھ جاتے ہیں ۔124 ارب روپے کا تعین ہو چکا،کسی قسم کا غبن ہوا تو معاملہ نیب کو بھجوائیں گے۔

عدالت نےاستفسار کیا کہ حکومت کیوں پیسہ ورکرز ویلفیئر میں منتقل نہیں کررہی؟ ڈیتھ گرانٹ کے لیے بھی پیسہ جاری نہیں ہو رہا ہے،کیا لوگ اپنی لاشیں لا کر سیکرٹریٹ میں رکھ دیں ،حکومت اگر کام نہیں کرے گی تو کسی تیسرے فریق سے کام کروا لیں گے، مسئلہ حل نہ ہوا تو عدالت پیسہ اکاؤئنٹ سے نکلوا لے گی۔

سپریم کورٹ نے حکومت کو صنعتی کارکنوں کو17 جنوری تک تمام ادائیگیاں کرنے کا حکم دے دیا اور یہ بھی قراردیا کہ ڈیتھ گرانٹس، میرج گرانٹس، اسکالرز شپس کی تمام رقوم ادا کی جائیں۔

workers welfare fund

Tabool ads will show in this div