کے ڈی اے نے 5 ہزار پلاٹوں پر قائم تجاوزات ختم کرادیں، سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/11/SC-Encroachment-Ijlas-Khi-pkg-1800-24-11-SANA.mp4"][/video]

کراچی اب پہلے والا نہيں رہا، يہ بدل رہا ہے، کے ڈی اے نے 5 ہزار سے زائد پلاٹس خالی کروانے کی رپورٹ سپريم کورٹ رجسٹری ميں پيش کردی۔ رپورٹ کے مطابق غيرقانونی قبضوں اور تجاوزات کیخلاف سخت کارروائياں کی جاچکی ہيں۔

سپريم کورٹ رجسٹری کے اجلاس ميں حکم ديا گيا ہے کہ کارروائياں نان اسٹاپ جاری رہيں، کے سرکلر ریلوے اور ٹرام کی بحالی کا کام تيز کرنے کی ہدايت بھی کی گئی ہے۔ جسٹس گلزار نے ريمارکس ديئے کہ شہر کو ماضی کی طرح کلين اينڈ گرين ديکھنا چاہتے ہيں۔

یہ بھی پڑھیں : غیر قانونی دکانوں کے انہدام کے بعد شادی ہالز کی باری

کراچی تجاوزات اور غير قانونی تعميرات سے مکمل پاک بنے گا، کے ڈی اے کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ قابضین سے 5 ہزار 485 پلاٹس واگزار کرالئے گئے۔

مزید جانیے : برنس روڈ پر دکانوں کے چھجے اور چبوترے توڑ دیئے

رپورٹ کے مطابق سب سے زيادہ ايکشن گلستانِ جوہر ميں ہوا، جہاں 26 رفاعی پلاٹس خالی کرائے گئے، 31 سڑکوں سے تجاوزات ہٹائی گئيں جبکہ گلشنِ اقبال اسکيم 24 دوسرے نمبر پر رہا، وہاں بھی 1874 پلاٹس خالی کرائے گئے، 8 رفاعی زمينیں بھی قبضہ مافيہ کے شکنجے سے چھڑوالی گئيں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سرجانی ٹاؤن ميں 904، نارتھ کراچی میں 284، کورنگی کے 248، لانڈھی ٹاؤن کے 43 جبکہ فیڈرل بی ایریا سے 39 پلاٹس خالی کروائے گئے۔

تفصیلات جانیں : تجاوزات سے بھری کراچی کی ایک اور ایمپریس مارکیٹ، حکومت کے لیے چیلنج

کے ايم سی کی تازہ کارروائيوں میں ايمپريس مارکيٹ، لائٹ ہاؤس، آرام باغ، برنس روڈ، گلشن اقبال، حسن اسکوائر، گلستان جوہر سمیت شہر کے مختلف علاقوں سے غیر قانونی سينکڑوں دکانوں اور تجاوزات کا خاتمہ ہوگيا۔

kda

ENCROACHMENT

SCP

Justice Gulzar

Tabool ads will show in this div