نواز شریف کی ایک دن کیلئے حاضری سے استثںٰی کی درخواست منظور

احتساب عدالت میں نوازشریف کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت ہوئی جس میں میاں صاحب کی ایک دن کیلئے حاضری سے استثںٰی کی درخواست منظور کرلی گئی، فلیگ شپ ریفرنس میں تفتیشی افسر پر پانچویں روز بھی وکیل صفائی کی جرح جاری رہی، العزیزیہ ریفرنس میں ستائیس نومبر کو فریقین سے حتمی دلائل طلب کر لئے گئے۔

العزیزیہ ریفرنس فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوگیا، نوازشریف کا بیان مکمل ہونے کے بعد حتمی دلائل کیلئے 27 نومبر کی تاریخ مقرر کرلی گئی ، فلیگ شپ ریفرنس میں تفتیشی افسر پر پانچویں روز بھی وکیل صٖفائی کی جرح مکمل نہ ہو سکی۔

جرح کے دوران تفتیشی افسر محمد کامران نے بتایا کہ طارق شفیع کی جانب سے آہلی اسٹیل کے پچیس فیصد شئیرز کی فروخت کے معاہدے کا وجود نہیں، جے آئی ٹی نے بھی اپنی رپورٹ میں یہی لکھا، فلیگ شپ کے قیام کیلئے نواز شریف کی جانب رقم دینے کا کوئی ثبوت نہیں ملا۔ پاکستان یا بیرون ملک میں میاں صاحب کے کسی ایسے اکاؤنٹ کا پتہ نہیں چلا جس سے حسن نواز کی آف شور کمپنیوں کیلئے پیسہ دیا گیا ہو۔

مزید پڑھیے : فلیگ شپ ریفرنس، نواز شریف کیخلاف نیب کے آخری گواہ کا بیان ریکارڈ

بیگم کلثوم نواز کے ایصال ثواب کی تقریب کے باعث میاں صاحب پیش نہ ہوئے،ایک دن کیلئے استثنیٰ مل گیا، خواجہ حارث نے فلیگ شپ ریفرنس میں بھی نواز شریف کے بیان کے لئے سوالنامہ فراہم کرنے کی استدعا کر دی۔ جج ارشد ملک نے کہا یہ معاملہ آئندہ سماعت پر دیکھیں گے فلیگ شپ ریفرنس کی اگلی سماعت پیر کو ہوگی العزیزیہ ریفرنس کی سماعت منگل تک ملتوی کر دی گئی ۔

 

flagship reference

NAB witness

Tabool ads will show in this div