ایسی اسکیموں کافائدہ نہیں،جس سےعوام کوخوشحالی نہ ملے،جام کمال

وزیراعلی بلوچستان جام کمال کا کہنا ہے کہ آج پہاڑوں سے واپس آنے والے فراری بھی اپنی غلطی تسلیم کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہمیں قومیت، زبان، مذہب کی بنیاد پر لڑنا چھوڑنا ہوگا، جج، نیب ،عدالتیں اس وقت کار آمد نہیں ہوتے جب تک سماجی احتساب نہ ہو۔

کوئٹہ میں مختلف جامعات کے طلباء اور طالبات میں لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب میں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کا کہنا تھا کہ ہماری گورننس منیجمنٹ سسٹم کی بنیاد بہتر نہیں، ماضی میں ترقیاتی اسکیمیں ذاتی مفاد کے لئے بنیں۔

 

انہوں نے کہا کہ دشمن نہیں چاہتا پاکستان اور بلوچستان خوشحال ہو، آج پہاڑوں سے واپس آنے والے فراری بھی اپنی غلطی تسلیم کرتے ہیں، حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے جام کمال نے کہا کہ ہڑتالیں اور بائیکاٹ نقصان دہ ہیں تو ان پر پابندی لگائی جائے، ہمیں قومیت زبان مذہب کی بنیاد پر لڑنا چھوڑنا ہوگا، جج، نیب ،عدالتیں اس وقت کار آمد نہیں ہوتے جب تک سماجی احتساب نہ ہو۔

 

جام کمال خان کا کہنا تھا کہ ايسے اسٹرکچرز کا فائدہ نہيں جوصرف ديکھنے کيلئے ہو، عوام کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لیے کوشاں ہیں، اسکيميں اس وقت تک فائدہ مند نہيں، جب تک عوام کو فائدہ نہ ہو، مگر افسوس عام لوگوں کو فائدہ دينے کيلئے اسکيميں نہيں لائی گئیں۔

 

وزیر اعلی بلوچستان کا مزید کہنا تھا کہ ماضي ميں شروع کيے گئے کئي پراجيکٹس بند پڑے ہيں، نئے پراجیکٹس کا فائدہ نہيں تو پيسہ کيوں ضائع کريں، پراجيکٹ نہیں چلے تو اس کا نقصان بھي عوام کو ہوگا، ہمیں ماضی میں ہونے والے غلط فیصلوں سے سبق سیکھنا چاہیئے، ماضی کی غلطياں دہرائیں گے تو مزيد پستي کي طرف جائیں گے۔

 

قبل ازیں کوئٹہ میں ہونے والی اس تقریب میں مختلف جامعات کے 150 طالبعلموں میں لیپٹ ٹاپ تقسیم کئے گئے۔ تقریب میں صوبائی وزراء اور ارکان اسمبلی نے بھی شرکت کی۔

cm balochistan

mega projects

Jam Kamal Khan

Tabool ads will show in this div