کراچی: پچھلے چوبیس گھنٹوں میں پولیس افسر سمیت مزید سات افراد ہلاک

اسٹاف رپورٹ
کراچی: شہر کراچی کے مختلف علاقوں میں موت کے سوداگر دندناتے پھر رہے ہیں ۔۔ فائرنگ اور تشدد کے واقعات میں پولیس افسر سمیت مزید سات افراد سے جینے کا حق چھین لیا گیا ۔

کورنگي چکرا گوٹھ ميں گولیاں چلیں جہاں ایک پوليس افسرکو نشانہ بنايا گیا ۔ اے ايس آئی کامران موقع پر دم توڑ گیا لاش جناح اسپتال منتقل ہوگئی۔

ادھر، منگھوپیر اور اورنگی ٹاؤن قصبہ کالونی میں بھی فائرنگ سے دو افراد جاں بحق ہوگئے۔


ملیر ندی کے قریب ویرانے سے ہاتھ پاؤں بندھی تین لاشیں ملیں ۔ تینوں کو سر پر گولی ماری گئی۔ شلوار قمیص پہنے مقتولین کے عمریں تیس سے چالیس کے درمیان ہیں۔ پولیس کا خیال ہے کہ تینوں کو اغوا کے بعد یہاں لاکر قتل کیا گیا۔


جائے وقوع سے نائن ایم ایم پستول کے9 خول بھی ملے ہیں۔


 


منگھو پير سے بھي ايک شخص کي تشدد ذدہ لاش ملي۔


 


لیاری میں فائرنگ سے ایک شخص جان سے گیا۔


 


ادھر بلديہ اتحاد ٹاؤن سے چوبيس دسمبر کو ملنے والي سر کٹي لاش کا معمہ حل کر ليا گيا۔ پولیس کے تفتیشی افسر کے مطابق ، ملزمہ فريدہ اور اس کے بيٹے اسماعيل نے جائيداد کے تنازع پر شوہر نازنين خان کو قتل کيا اور سر کاٹ کر نالے ميں پھینک دیا۔ سماء

میں

burger

MQM

سمیت

britain

Tabool ads will show in this div