شہرہ آفاق مصور، خطاط اور نقاش صادقین، جن کی ہر تصویر ایک الگ داستاں

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : عالمی شہرت یافتہ ممتاز خطاط اور مصور صادقین کو ہم سے بچھڑے پچیس برس بیت گئے۔ ان کی تخلیقات میں وقت گزرنے کے ساتھ تہہ در تہہ معنویت دریافت کی جا رہی ہے۔ فنون لطیفہ کے لئے ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کررہی ہیں۔

صادقین نے اپنی شمعِ زندگی کو دونوں سروں سے جلایا ، ان کا بیشتر وقت مصوری یا خطاطی میں گزرتا، کینوس سامنے نہ ہوتا تو رباعیاں لکھ رہے ہوتے ۔ صادقین نازاں تھے کہ دنیا میں ان کا کوئی ہم نام نہیں۔ سید صادقین احمد نقوی 1930ء کو امروہہ میں پیدا ہوئے ۔ آگرہ یونیورسٹی سے بی اے کیا اور تقسیم ہند کے بعد خاندان کے ہمراہ کراچی آگئے۔ صادقین نے خطاطی کے اتنے زاویے پیش کئے کہ اپنے ہم عصروں کو بھی دم بخود کر دیا ان کے فن کی اتنی پرتیں ہیں کہ بس کھولتے جائیں اور ڈوبتے جائیں ۔

صادقین نے غالب سمیت ممتاز شعراء کے کلام کو صورت عطا کی ، جن میں ہر لفظ بولتا دکھائی دیتا ہے ، یوں شعر اپنے معنی و طلسم سمیت دیکھنے والے اذہان و قلوب میں اترنے لگتا ہے۔  صادقین کے ذہن رسا میں تخلیق کا آبشار بہتا تھا۔ صادقین نے 27 اکتوبر 1972 کو 24 گھنٹوں میں 240 فٹ بڑی پینٹنگ تخلیق کی جو ورلڈریکارڈ ہے، تاہم اسے گینیزبک میں لانے کیلئے حکومتی سطح پر اقدامات کی ضرورت ہے۔

صادقین کا کہنا تھا انہوں نے مصوری کا انتخاب کیا اور تمام صلاحیتیں اس میں جھونک دیں۔ میلوں کے حساب سے خطاطی اور ایکڑوں کے حساب سے مصوری کی۔ 40 برس کی فنی زندگی میں 20 ہزار سے زائد فن پارے تخلیق کئے ۔ یعنی ایک برس میں 500 شاہکار۔

صادقین کے ہاں شاعری اور مصوری ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں ، وہ کہتے تھے :
ایک بار میں ساحری بھی کرکے دیکھوں
کیا فرق ہے شاعری بھی کرکے دیکھوں
تصویروں میں اشعارکہے ہیں میں ، نے
شعروں میں مصوری بھی کرکےدیکھوں

صادقین کو حکومت پاکستان کی جانب سے تمغہ امتیاز اور ستارہ امتیاز سے نوازا گیا ۔ انکی آرٹ ، کے نمونے فیصل مسجد سمیت ملکی اور غیر ملکی جامعات، اداروں اور عجائب گھروں کی زینت ہیں۔ صادقین سانسوں کی مالا ٹوٹنے تک اس میں مصوری اور خطاطی کے موتی پروتے، رہے۔ وہ 10 فروری 1987ء کو کراچی میں انتقال کر گئے۔اب ''سخی حسن'' قبرستان  میں محو استراحت ہیں۔ صادقین نے سچ ہی کہا تھا''تصویروں میں اشعار کہے ہیں میں نے'' ۔ کینوس پہ بکھرے انکے اشعار نما شہکاروں کا رنگ آج بھی دھندلا ہے اور نہ ان پر وقت کی گرد جم سکی ہے ۔ کیوں کہ صادقین کا فن ماورائے عصر تھا اور رہے گا۔ سماء


ویڈیو دیکھنے کیلئے نیچے دیئے گئے ویڈیو کے لنک پر کلک کریں

اور

کی

Saudi Arabia

ایک

camp

crude

Tabool ads will show in this div