طالبات کے ساتھ نازیبا حرکات کی ویڈیوز بنانے والے استاد کیخلاف مقدمہ درج

سندھ کے ضلع میرپور خاص میں پولیس نے اسکول کی کم عمر طالبات کے ساتھ  نازیبا حرکتیں کرتے ہوئے ویڈیوز بنانے والے اسکول ٹیچر کیخلاف مقدمہ درج کرلیا جبکہ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر نے غیر اخلاقی حرکات پر استاد کو معطل کردیا۔

تھانہ دلبر خان مہر پولیس کے مطابق انہیں اطلاع ملی کہ میرپورخاص کے نواحی گاؤں عالم خان جروار کے پرائمری اسکول میں مقرر استاد یاسین کانہیو طلبہ و طالبات کو جنسی طور پر ہراساں کر رہا ہے، پولیس نے اپنے ذرائع سے پتہ لگانے کی کوشش کی تو کچھ ویڈیو کلپس مل گئیں جس میں دیکھا گیا کہ اسکول ٹیچر یاسین کانہیو ایک طالبہ کے ساتھ غیراخلاقی حرکت کر رہا ہے۔

ملزم اپنی ہی کم عمر طالبات کو مختلف مقامات پر لے جاکر ان کے ساتھ غلط حرکتیں کرتا اور اور خود ہی اس کی ویڈیوز بھی بناتا رہا، پولیس نے ویڈیو شواہد کی بنیاد پر ملزم یاسین کانہیو کیخلاف تھانہ دلبر خان مہر میں سب انسپکٹر غلام مصطفیٰ تھیبو کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: تین ملزمان نے بچے کو زیادتی کا نشانہ بناکر ویڈیو انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کردی

پولیس کی جانب سے مقدمہ درج کئے جانے کے بعد ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افسر میرپورخاص نے استاد یاسین کانہیو کو معطل کردیا ہے جبکہ ویڈیوز سامنے آنے کے بعد ملزم روپوش ہے، جس کی گرفتاری کیلئے پولیس کارروائیاں جاری ہیں۔

گزشتہ ہفتے خیرپور میں 3 ملزمان نے ایک 10 سالہ بچے کو بدفعلی کا نشانہ بناکر ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردی تھی جس پر پولیس نے مقدمہ تو درج کرلیا تاہم واقعہ میں ملوث ملزمان تاحال گرفتار نہ ہوسکے۔

Tabool ads will show in this div