کراچی میں اپنا گھر بنانا ادھورا خواب

سائیں سرکار روٹی کپڑا اور مکان کا نعرہ تو لگاتی ہے لیکن آج تک کوئی سستی رہائشی اسکیم کا اعلان نہ کرسکی ، اپنا گھر بنانے کے حوالے سے کراچی کی عوام کو بڑی رکاوٹیں درپیش ہیں۔

اپنا گھر بنانا ہر کسی کا خواب ہوتا ہے، لیکن کراچی میں اکثر اوقات یہ خواب محض خواب ہی رہ جاتا ہے۔ شہری اسٹیٹ ایجنسی کے چکر لگاتے رہ جاتے ہیں لیکن مایوس لوٹ جاتے ہیں۔

ایسی ہی بپتا ہے نارتھ کراچی کے رہائشی معاذ علی کی جو سستا گھر نہ ملنے کی وجہ سے سخت پریشان ہیں ۔

شہر میں پچیس ہزار ایکڑ سے زائد سرکاری زمینیں خالی پڑی ہیں، جس کا کنٹرول کے ڈی اے، ایل ڈی اے اور ایم ڈی اے کے پاس ہے۔

دس برس گزر گئے لیکن سائیں سرکار کراچی والوں کو سستی رہائشی اسکیم نہیں دے سکی۔

وزیر بلدیات سندھ سعید غنی نے سستی اسکیمیں نہ آنے کا سارا ملبہ کے ڈی اے ، ایم ڈی اے اور ایل ڈی اے افسران پر ڈال دیا، کہتے ہیں کہ میں سمجھتا ہوں جو افسران ان اداروں میں رہے وہ اسکیموں سے متعلق سنجیدہ نہیں تھے، میری کوشش ہے کہ جلد سستی اسکیمیں لیکر آئیں۔

چائنہ کٹنگ اور قبضے کو روکنے کیلئے سرکاری سطح پر بڑے بڑے دعوے کیے جاتے ہیں لیکن غریبوں کو سستی رہائشی اسکیمیں دینے کیلئے کوئی عملی کام نہیں کیا جارہا ہے۔

china cutting

kda

MDA

Apna Ghar

cheap housing schemes in karachi

Tabool ads will show in this div