پاکستان میں روزگار کیلئے ورکنگ گروپ تشکیل دیے جائیں گے، مشترکہ اعلامیہ

Nov 04, 2018
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/11/MA-Pak-China-Joint-Statement-PKG-04-11-Kami.mp4"][/video]

وزیراعظم عمران خان کے دورہ چین پر مشترکہ اعلامیہ جاری کردیا گیا ۔ دونوں ملکوں نے ڈالر کے بجائے اپنی کرنسی میں تجارت کا فیصلہ کرلیا ۔ پاکستان میں روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لئے ورکنگ گروپ تشکیل دیئے جائیں گے ۔

وزیراعظم عمران خان کا چین کا دورہ کامیاب رہا ۔ دونوں ممالک کے مابین پندرہ معاہدے طے پا گئے ۔ دو ہزار پانچ کے فرینڈ شپ ٹریٹی پر کاربند رہنے اور سیاسی تعلقات اور اسٹریٹجک کمیونیکیشن مضبوط بنانے پر اتفاق گیا۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ سی پیک کودرپیش ہر طرح کے خدشات اور خطرات سے بھرپور انداز میں نمٹا جائے گا ۔ چین پاکستان کو معاشی بحران سے نکالنے کیلیے مدد بھی فراہم کرے گا۔

مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ تعلقات کو کمیونٹی کی سطح پر مستحکم بنایا جائے گا جبکہ پاکستان میں معاشی ترقی اور روزگار پیدا کرنے کے لیے ورکنگ گروپ تشکیل دیے جائیں گے ۔

متعلقہ خبر: عمران خان کی چینی ہم منصب سے ملاقات، 15 مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط

دفاعی تعاون کو مزید وسعت دینے کیلیے دونوں ملکوں نے مشترکہ فوجی مشقوں اور یو این او امن مشن کیلیے روابط بڑھانے پراتفاق کیا، پاک بھارت تنازعات کےحل کیلیے پاکستان کی کوششوں کو قابلِ قدر قرار دیا گیا، جبکہ پاکستان اور افغانستان وزرائے خارجہ سطح پر مذاکرات تیز کریں گے اور سہ ملکی مذاکرات کا دور اسی سال ہوگا ۔

چین نے شنگھائی تعاون تنظیم میں پاکستان کی شمولیت کا خیرمقدم کیا اور کہا علاقائی معاملات پر مشترکہ تعاون اور رابطوں کو مربوط بنایا جائے گا اور مقاصد کےحصول کیلیے قانون کی حکمرانی اور طویل المدتی جامع رولز بنائے جائیں ۔

اعلامیہ میں دہشت گردی کے خاتمے اور امن کیلیے پاکستان کی کوششوں کو قابلِ ستائش قرار دیا گیا ۔

وزیراعظم نے چینی قیادت کو دورہ پاکستان کی دعوت دی جو قبول کرلی گئی ۔

IMRAN KHAN

CHINA VISIT

Tabool ads will show in this div