کراچی میں بدترین ٹریفک جام ،کئی علاقوں میں گاڑیوں کی طویل قطاریں

کراچی میں 4 روز بعد کاروبارِ زندگی معمول پر آنے سے مختلف علاقوں میں ٹریفک کا شدید دباؤ ہے۔

کراچی میں چار روز سے جاری دھرنے اور احتجاج کے بعد ہفتے کو معمولات زندگی بحال ہوئے تو شہریوں نے شہر کے مختلف علاقوں کا رخ کیا۔

شہر کی مرکزی شاہراہ ایم اےجناح روڈ،صدر،جامع کلاتھ پرٹریفک کا شدید دباؤ ہے اور ایم اے جناح روڈ کا ایک حصہ گرین لائن کے تعمیراتی کام کے باعث بند ہونے سے اطراف کی سڑکوں پر بدترین ٹریفک جام ہے۔ میٹروپول سے نرسری تک بھی ٹریفک کی روانی متاثر ہوئی ہے۔

ادھر ماڑی پورروڈ پر بھی گاڑیوں کی طویل قطاریں لگی ہوئی ہیں۔ گارڈن کے علاوہ پاکستان کوارٹرز اورنشترروڈ پر بھی ٹریفک کا دباؤ ہے۔

اس کے علاوہ الہٰ دین پارک سے گلشن چورنگی تک بدترین ٹریفک جام ہے اور گاڑیوں کی طویل قطاریں لگی ہوئی ہیں۔ کوریڈو تھری،کھارادر،جہانگیرروڈ پر بھی ٹریفک کا دباؤ زیادہ ہے اور شہری کئی گھنٹوں سے پھنسے ہوئے ہیں۔

کراچی میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر عائد پابندی ختم

کراچی میں 4 روز سے عائد موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر عائد پابندی ہٹالی گئی ہے۔محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے جاری نوٹی فیکشن میں بتایا گیاہےکہ کراچی میں جلسے،جلوس اورریلیوں پرعائدپابندی بھی ختم کردی گئی ہے۔ شہر میں جاری احتجاج اور مظاہروں کے باعث 4 روز قبل 10 روز کے لئے موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ تاہم گذشتہ شب دھرنا مظاہرین کی قیادت کے ساتھ مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد آج بروز ہفتہ یہ پابندی اٹھالی گئی ہے

karachi traffic jam

Tabool ads will show in this div