آسیہ بی بی کیس:سپریم کورٹ کے فیصلےکیخلاف نظرثانی درخواست دائر

Nov 02, 2018

توہين رسالت کیس میں آسیہ بی بی کی بريت کے فیصلے کے خلاف نظرثاني کي درخواست دائر کردي گئي ۔ پنجاب کے وزيراطلاعات فیاض الحسن چوہان کہتے ہيں کہ نظر ثانی فیصلہ آنے تک آسيہ بي بي کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش کی جائے گی ۔

سپریم کورٹ کی جانب سے آسیہ بی بی کی بریت کا فیصلہ سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں چیلنج کیا گیا ہے۔ نظرثاني درخواست مدعي مقدمہ قاری نے اظہر صدیق ایڈووکیٹ اور غلام مصطفیٰ چودھری کی وساطت سے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں دائر کی ہے۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ آسیہ بی بی نے تفتیش کے دوران جرم کا اعتراف کیا، ایف آئی آر کے اندراج میں تاخیر کا مطلب یہ نہیں کہ ملزمہ بے قصورہے۔

نظر ثانی درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ آسیہ بی بی کی بریت کے فیصلے کے خلاف دائردرخواست کا فیصلہ آنے تک آسیہ بی بی کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے۔

سماءسے گفتگوميں وزيراطلاعات پنجاب فياض الحسن چوہان نے بتايا کہ نظرثاني فيصلے تک آسيہ بي بي کا نام اي سي ايل ميں ڈالنے کي سفارش کي جائيگی، نہيں چاہتے پاکستان ميں رياست کي رٹ چيلنج ہو۔

وزیراطلاعات پنجاب کے مطابق ايک سو ستائيس اکاونٹس سے رياستي اداروں کيخلاف اشتعال انگيزي کي جارہي تھي جن میں سے نوے آئي ڈيز بھارت سے آپریٹ ہو رہی تھیں۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے آسیہ بی بی کو توہین رسالت کا جرم ثابت نہ ہونے پر شک کا فائدہ ديتے ہوئے بری کردیا تھا جس کے خلاف مذہبی جماعتوں کی جانب سے ملک بھر میں احتجاج کيا جارہا ہے ۔

supreme case

Aasia bibi case

aasia bbi case verdict

Tabool ads will show in this div