وفاقی اردو یونی ورسٹی کا سائنس بلاک مخدوش،کسی بھی وقت حادثے کاخدشہ

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/11/Urdu-Uni-Dangerous-Building-Khi-PKG-25-10-Rems.mp4"][/video]

وفاقی اردو یونیورسٹی کا سائنس بلاک مخدوش قرار دیئےجانے کے باعث ہزاروں طلبہ خوف کا شکار ہیں۔عمارت کسی بھی وقت حادثے کا شکار ہوسکتی ہے۔

وفاقي اردو يونيورسٹي مالي بحران کا شکارتو تھی ہی اب اس کی عمارت بھی مخدوش ہونے لگی۔ عمارت کے بی ایس ڈپارٹمنٹ میں جگہ جگہ دراڑيں پڑچکی ہیں جبکہ چھتوں سے جھڑتا پلستر طلبہ کے سروں پر خوف کے سائے کی طرح منڈلا رہاہے۔بي ايس بلاک کی عمارت بنے 40 سال ہوگئےہیں۔عمارت کا اسٹيل ٹيسٹ کرايا گيا توعمارت کو مخدوش قرارديا گيا۔

وائس چانسلر کہتے ہیں کہ اگر عمارت گرا کر نئی بلڈنگ بنائی جائے گی تو اس پر1ارب روپے کا خرچہ آئےگا۔ دومنزلہ عمارت میں درجنوں کلاس رومز، لیبارٹریز اورآفس سمیت بی ایس کے پانچ شعبہ جات قائم ہیں۔

Federal Urdu University

universities in karachi

Tabool ads will show in this div