جائیداد ضبطگی سے متعلق اسحاق ڈار کی اہلیہ نے اعتراضات دائر کردیے

سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی اہلیہ نے جائیداد ضبطگی کے حوالے سے احتساب عدالت میں اپنے اعتراض  دائر کر دیے۔


احتساب عدالت میں اسحاق ڈار کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت ہوئی۔ تبسم اسحاق ڈار نے اپنی درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ ملزم اسحاق ڈار ہیں جبکہ لاہور والا گھر میری ملکیت ہے، یہ گھر 14 فروری 1989 کو اسحاق ڈار نے حق مہر میں گفٹ کیا اور اس گھر کی میں اکیلی مالک ہوں، یہ ضبط نہیں کیا جاسکتا، گھر صوبائی حکومت کی تحویل میں جانے سے میرا نقصان ہوگا۔

اسحاق ڈار کے اثاثوں کی نیلامی کیلئے پیشرفت رپورٹ احتساب عدالت میں جمع

میری پاکستان سے باہر کوئی جائیداد نہیں، اسحاق ڈار

ہجویری فاؤنڈیشن نے بھی ایک بنک اکاؤنٹ سے متعلق اعتراضات دائر کر دیئے ہیں۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ اسحاق ڈار کے نام کا ایک بینک اکاؤنٹ ہمارا ہے، فاؤنڈیشن کو اکاؤنٹ میں موجود فنڈز استعمال کرنے کی اجازت دی جائے۔

عدالت نے اعتراضات کی کاپی نیب پراسیکیوٹر عمران شفیق کو فراہم کرتے ہوئے اثاثہ جات ریفرنس کی مزید سماعت 5 نومبر تک ملتوی کردی۔

عدالت نے تبسم اسحاق ڈار اور ہجویری ٹرسٹ کے اعتراضات پر نیپ پراسیکیوٹر سے7 نومبر کو دلائل طلب کر لئے ہیں۔

nab reference

Property Case

Tabool ads will show in this div