پاکستان کیلئے آئندہ 3 سے 6 ماہ مشکل ہیں، وزیراعظم عمران خان

Oct 23, 2018

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ نئے پاکستان ميں اداروں کو مضبوط کرناچاہتےہيں ۔ ہمیں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کا سامنا ہے۔ ریاض میں جاری تین روزہ سرمايہ کاري کانفرنس سے خطاب کے دوران بولے کہ ملک کیلئے اگلے تین سے چھ ماہ مشکل ہیں۔

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں عالمی سرمایہ کاری کانفرنس سے خطاب کے دوران وزیراعظم نے کہا کہ ہم قرضے کے لیےآئی ایم ایف اوردوست ممالک سے رابطہ کررہے ہیں۔ جو بھی اصلاحات کریں گے، ان کا اثر آئندہ آنے والے دنوں پر پڑے گا۔

عمران خان نے کہا کہ ہم اداروں کو مضبوط کرناچاہتےہيں، نياپاکستان قائد اعظم کےاصولوں کےمطابق بنانا ہے کیونکہ یہ ملک اسلام کے نام پر وجود ميں آيا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اقتدار ملے ہوئے 60 روز ہوئے ہیں۔ معاشی صورتحال کے پیش نظر ہمیں اپنی برآمدات میں اضافہ کرنا ہوگا تا کہ زرمبادلہ کو بڑھایا جا سکے۔ آئندہ 3 سے 6 ماہ مشکل ہیں کیونکہ ہمیں قرضوں کی ادائیگی کیلئے پیسوں کی ضرورت ہے جس کے لیے دوست ممالک اور آئی ایم ایف سے بات چیت جاری ہے۔

وزیراعظم کے مطابق بڑے عہدوں پرکرپٹ افراد کی تعیناتی کے باعث ادارے تباہ ہوگئے لیکن بہتری کیلئے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

معاشی بہتری کیلئے قرض کی اشد ضرورت ہے: عمران خان

اپنے خطاب میں عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں ایک کروڑ گھروں کی کمی ہے، اسکیم کے تحت 50 لاکھ نئے گھر تعمیر کیے جاٗئیں گے۔

اس سے قبل غیرملکی میڈیا کو سعودی عرب روانگی سے پہلے  انٹرویومیں عمران خان نے واضح کیا کہ پاکستان کی معیشت میں استحکام کیلئے سعودی سرمایہ کاری کانفرنس میں شرکت ضروری تھی ، سعودی قرضوں کی ہنگامی ضرورت ہے۔ ہمارے پاس دوماہ سے زیادہ کے زرمبادلہ ذخائر موجود نہیں۔

PM IMRAN KHAN

investment conference in saudia

Tabool ads will show in this div