کرکٹ کے بڑے نام فکسنگ میں ملوث ہیں، الجزیرہ کا دعوی

[caption id="attachment_1314752" align="alignnone" width="680"] photo : Al Jazeera[/caption]

کرکٹ میں اسپاٹ فکسنگ پر بین الاقوامی خبراساں ادارے الجزيرہ نے بڑے انکشاف کردئيے جس میں کرکٹ کے بڑے نام فکسنگ میں ملوث ہیں ۔

الجزيرہ نے دعویٰ کيا ہے کہ پاکستان انگلینڈ اور آسٹریلیا کے کرکٹرز اسپاٹ فکسنگ میں ملوث ہيں، اسپاٹ فکسنگ کے واقعات 2011اور 2012کے درمیان ہوئے۔

الجزيرہ کے مطابق انگلش کھلاڑی نے مبینہ طور پر7میچز میں اسپاٹ فکسنگ کی ، آسٹریلوی کھلاڑيوں نے 5، پاکستانیوں نے 3میچز میں اسپاٹ فکسنگ کی جبکہ کل 15 میچز میں اسپاٹ فکسنگ کے26واقعات ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق سال 2011اور 2012کے درمیان فکسنگ کے واقعات  6ٹیسٹ ، 6ون ڈے اور3  ٹی20 میچز میں ہوئے۔

مزید پڑھیے: دانش کنیریا پہلے غلطی تسلیم کرلیتے تو فائدہ ہوسکتا تھا،پی سی بی

اس سے قبل الجزیرہ کو ہی انٹرویو دیتے ہوئے سابق پاکستانی ٹیسٹ کرکٹردانش کنیریا نے چھ سال بعد میچ فکسنگ کے جرم کا اعتراف کیا تھا انہوں نے کہا تھا کہ جھوٹ کے ساتھ زندگی نہیں گزاری جاتی۔

دانش کنیریا نے بتایا تھا کہ جان بوجھ کربرطانوی کرکٹر میرون ویسٹ فیلڈ کومشکوک شخص انوبھٹ سےملوایا، ویسٹ فیلڈ دولت کماناچاہتا تھا اور میرا فرض تھا کہ اس معاملے پربورڈ کو خبردارکرتا لیکن میں نے ایسانہیں کیا، حکام کو معاملے سے آگاہ نہ کرنے پر سخت پچھتاوا ہے۔

دانش کنیریا نے میچ فکسنگ کے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے کہا تھا کہ تمام پاکستانیوں، پرستاروں اورانگلش کاؤنٹی کےساتھیوں سےمعذرت چاہتا ہوں۔

مزید پڑھیے : سلمان بٹ اورمحمدآصف سے محمد عامر کے کیسےتعلقات ہیں؟

سابق کھلاڑی نے اپنی غلطی پر شرمندگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آئی سی سی یا انگلش کرکٹ بورڈ کے حکام کو معاملے سے آگاہ نہ کرنے پر سخت پچھتاوا ہے۔جھوٹ کے ساتھ زندگی نہیں گذاری جاسکتی۔

تاحیات پابندی کا شکار دانش کنیریا نے مزید کہا کہ ایک غلطی کی وجہ سے عزت، مقام اور دوست سب

spot fixing scandal

Tabool ads will show in this div