جنسی ہراسانی کا الزام ، موسیقار انو ملک کا سخت ردعمل

بھارتی موسیقار انو ملک کے وکیل ذوالفقار میمن نے اپنے کلائنٹ پر لگنے والے جنسی ہراسانی کے تمام الزام کو مسترد کردیا۔

این ڈی ٹی وی کے مطابق میوزیشین انو ملک کے وکیل ذوالفقار میمن نے مقامی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ انو ملک پر لگائے گئے جنسی ہراسانی کے تمام الزامات جھوٹ پر مبنی اور بے بنیاد ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ انو ملک خود بھارت میں می ٹو مہم کی عزت کرتے ہیں لیکن کردار کشی کیلئے اس تحریک کا استعمال استعمال کیا جارہا ہے ۔

اس سے قبل بالی ووڈ میں کئی سپر ہٹ گانے دینے والی گلوکارہ شوئیتا پٹیل نے اپنی ’’می ٹو‘‘ کہانی بتاتے ہوئے کہا ہے کہ 2001 میں جب وہ بالی ووڈ انڈسٹری میں قدم جمانے کی کوشش کررہی تھیں اس وقت انہیں انوملک کے مینیجر کافون آیاتھا اور انہیں گانے کے آڈیشن کے لیے بلایاگیاتھا۔

شوئیتا پٹیل نے کہا کہ آڈیشن کے بعد انوملک نے مجھے کہا کہ وہ مجھے سنیدھی چوہان اور گلوکار شان کے ساتھ گانا گانے کا موقع دیں گے لیکن پہلے مجھے انہیں بوسہ دینا ہوگا۔

شوئیتا نے کہا اس وقت میری عمر صرف 15 برس تھی اور میں اسکول میں پڑھتی تھی اور انہیں ’’انو انکل‘‘ کہتی تھی، یہ میری زندگی کا سب سے برا تجربہ تھا۔

شوئیتا پنڈت نے ٹوئٹر پر تمام نوجوان لڑکیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ لوگوں کو انوملک سے خبردار رہنے کی تلقین کرتی ہوں۔

ALLEGATIONS

#MeToo

Anu Malik's

Shweta Pandit

Tabool ads will show in this div