کالمز / بلاگ

یہ کیسی تبدیلی ہے۔۔۔؟

تبدیلی کے بدلے میں عوام کو کیا ملا؟ مہنگائی مہنگائی اور صرف مہنگائی۔
 

تحریک انصاف کا ایجنڈا تھا کہ ملک میں تبدیلی لائی جائے گی اس تبدیلی کے نام پر ہی عوام نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دیا اور عمران خان بر سر اقتدار آئے۔ عوام کی سوچ تھی کہ پی ٹی آئی کے آتے ہی پاکستان کی حالت بہتر ہونا شروع ہو جائے گی۔ ایک عام آدمی بھی بڑے بڑے خواب دیکھنے لگا تھا کیونکہ اس سے کہا گیا تھا کہ پاکستان میں لوگ باہر سے آ کر کام کریں گے۔

لیکن یہ کیسی تبدیلی ہے کہ ہر چیز عام آدمی کی پہنچ سے دور ہوتی چلی جا رہی ہے۔ روٹی بھی اس سے چھینی جا رہی ہے۔ عام ضرورت کی اشیاء جو اسے سستی مہیا ہونی تھی وہ بھی مہنگی کر دی گئی ہیں۔ اقتدار میں آنے سے پہلے ہر پارٹی کو ملک کی صورت حال کا پتا ہوتا ہے۔ اگر آپ کو بھی پتا تھا تو پھر آپ نے کوئی پالیسی تشکیل دی؟ اگر دی ہے تو عوام کو سچ بتائیں کہ کب تک ایک پاکستانی کے حالات ٹھیک ہوں گے؟ کب ایک غریب آدمی غربت یا بے روز گاری کی وجہ سے خود کشی نہیں کرے گا؟ کب ایک عام پاکستانی کے گھر میں خوشحالی آئے گی؟ کب تک میرے ملک میں بجلی عام ہو گی؟ کب تک ہر شہری کو صاف پانی ملے گا؟ کب تک کرپشن کا خاتمہ ہو جائے گا؟ کب تک عام آدمی بھی انصاف حاصل کر سکے گا؟ کب تک عام آدمی کو صحت کی سہولتیں اس کے دروازے پر حاصل ہوں گی ؟ کب غریب آدمی کی ضروریات زندگی تک رسائی ہو گی؟ کب عام آدمی اپنے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کر سکے گا؟ کب تک عام آدمی کو چھت نصیب ہو گی؟ آخر کب تک ایک عام پاکستانی مہنگائی کی چکی میں پستا رہے گا؟

ان تمام سوالوں کا جواب پی ٹی آئی کو دینا ہو گا اور عوام کو مطمئن کرنا ہو گا کیونکہ موجود صورت حال سے ایک عام آدمی متاثر ہوا ہے۔ اس نے اپنے حالات بہتر کرنے کے لئے پی ٹی آئی کو ووٹ دیا تھا لیکن اس کی حالت پہلے سے بھی ابتر ہو گئی ہے۔ عوام کو سہولتیں دینا حکمرانوں کا فرض ہے وہ ووٹ اسی لئے لیتے ہیں اور عام آدمی اپنا ووٹ بھی اس کو دیتا ہے جس پارٹی سے وہ مطمئن ہوتا ہے۔

مجھے افسوس ہے کہ اب تک کوئی بھی پارٹی عوام کو ریلیف دینے میں کامیاب نہیں ہو سکی ہر حکومت میں عوام پر مہنگائی کا بم گرایا گیا۔ اس بار عوام کو کہا گیا کہ آپ آزمائی ہوئی پارٹیوں کو نہ آزمائیں، عوام نے ایسا ہی کیا لیکن بدلے میں کیا تبدیلی ملی؟ مہنگائی مہنگائی اور صرف مہنگائی۔

خدارا اپنے وعدوں کا پاس کریں اور عوام سے مذاق کرنا چھوڑ دیں۔ غریب آدمی کے لئے بھی سوچیں تاکہ اس کے ادھورے خواب بھی پورے ہو سکیں آپ کی کامیابی تب ہے جب آپ اپنے کئے گئے وعدوں کو پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔ آپ کا فرض بنتا ہے کہ عام آدمی کو اہمیت دیں اور اپنی پالیسی بناتے وقت عام آدمی کو مد نظر رکھیں کہ اس کو کون کون سی مشکلات ہیں۔ جب تک میرے ملک میں عام آدمی خوشحال نہیں ہو گا تب تک ملک بھی ترقی نہیں کر سکتا۔ ملک کی ترقی کا دارومدار عام آدمی پربھی ہے کیونکہ ایک عام آدمی ہی آپ کو اقتدار میں لے کر آتا ہے اور وہی آپ کو اختیار دیتا ہے کہ آپ ملک کی اور اس کے لئے بہتر فیصلے کر سکیں۔

اب آپ کو ایسے فیصلے کرنے ہیں جو ملک اور عوام کے لئے اہم ہوں قرضے نہ لینے کا فیصلہ کیا گیا تھا لیکن آخر کار قرضہ بھی لینے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ یقیناً یہ قرضہ ہمیں سخت شرائط کے ساتھ ملے گا جس سے عام آدمی کی مشکلات میں مزید اضافہ ہو گا۔ عوام کو یہ بھی بتایا جائے کہ قرضہ کیسے ختم کیا جائے گا اور کتنے عرصہ میں قرضے کا بوجھ اتر جائے گا۔ آپ عام آدمی کو آگاہ کریں کہ آپ کے پاس کیا کیا تجاویز ہیں جس کی وجہ سے وہ خوشحال ہو جائے گا۔ ہمیں پی ٹی آئی کی حکومت کے جواب کا انتظار ہے۔ آپ کے دور اقتدار میں ہی ڈالر کہاں سے کہاں پہنچ گیا ہے۔ امید کرتے ہیں کہ ان تمام مسائل کو جلد حل کر لیا جائے گا تاکہ عام آدمی بھی سکھ کا سانس لے سکے۔

PTI

Tabool ads will show in this div