تین ماہ کے بچے کیساتھ اقوام متحدہ اجلاس میں نئی تاریخ رقم

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا اپنی ننھی بیٹی کے ہمراہ اقوام متحدہ اجلاس میں شرکت کیلئے پہنچ گئیں۔

اجلاس کے دوران جسینڈا بیٹی کو اپنی گود میں لیے عالمی رہنماؤں کی تقاریر سنتی رہیں۔ اس موقع پر بیٹی نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں شرکت کرنے والی پہلی بچی بن کر تاریخ رقم کردی۔

 

سی این این کی رپورٹ کے مطابق 38 سالہ جیسنڈا ایرڈرن اقوام متحدہ کے نیلسن منڈیلا امن اجلاس کے دوران ہال میں اپنی بیٹی نیو کو پیار کرتی اور گدگداتی رہیں جس کو کیمرے کی آنکھ نے محفوظ کرلیا۔

بعد ازاں جب نیوزی لینڈ کی وزیراعظم اقوام متحدہ کے اجلاس سے خطاب کررہیں تھیں اس وقت نیو اپنی والدہ کو دیکھ رہیں تھیں، جب کہ اس وقت انہیں وزیراعظم کے شوہر کلارک گفورڈ نے سنبھالا ہوا تھا، تام اس سے بھی زیادہ دلچسپ صورت حال اس وقت دیکھنے میں آئی جب بچی کے پیمپر تبدیل کرتے ہوئے اچانک جاپانی وفد کمرے میں داخل ہوا اور ان کا چہرہ حیرت سے کھلا کا کھلا رہ گیا۔

واضح رہے کہ نیوزی لینڈ کی خاتون وزیراعظم جسینڈا کے ہاں دوران وزارت رواں برس 21 جون کو بیٹی کی ولادت ہوئی، اس سے قبل 1990میں بینظیر بھٹو نے بھی دوران وزارت عظمی بختاور کو جنم دیا تھا۔

 

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم اور پاکستان کی سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو میں ایک فرق یہ ہے کہ جیسنڈا ایرڈرن نے تاحال باضابطہ طور پر شادی نہیں کی اور شادی سے پہلے ہی بچے کو جنم دیا، تاہم وہ اپنے پارٹنر سے جلد شادی کا ارادہ رکھتی ہیں۔

 

جیسنڈا ایرڈرن نے بچی کی پیدائش کی اطلاع دیتے ہوئے اپنے انسٹاگرام پر پارٹنر کلارک گفورڈ اور نوزائیدہ بچی کی تصویر شیئر کی اور کہا کہ وہ ماں بننے کے بعد خود کو سب سے زیادہ خوش قسمت محسوس کر رہی ہیں۔

واضح رہے کہ جیسنڈا ایرڈرن نے 19 اکتوبر 2017 کو نیوزی لینڈ کی نوجوان ترین خاتون وزیراعظم کا عہدہ سنبھالا تھا۔ وہ نیوزی لینڈ کی 150 سالہ تاریخ میں تیسری خاتون وزیر اعظم ہیں، جب کہ وہ اس وقت حکومت کی سربراہی کرنے والی دنیا کی واحد نوجوان ترین خاتون بھی ہیں۔

newzealand

UNGA

Jacinda Ardern

Tabool ads will show in this div