سادگی کا فروغ نئے پاکستان کی شناخت ہے، صدر مملکت

صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کہتے ہیں کہ موجودہ حکومت نے نئے پاکستان بنانے کاعزم کیا ہے۔ بے ایمانی سےتنگ عوام اب پاک معاشرہ چاہتے ہیں۔ سادگی کا فروغ نئے پاکستان کی شناخت ہے

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے پہلا خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ احتساب کے اداروں کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے، عوامی خواہشات کے احترام میں ہی حکومتوں کی کامیابی ہے۔

صدر مملکت نے کرپشن کو سب سے بڑا مسئلہ قرار دے دیا ۔ بولے کرپشن کے ناسور نے ملکی معیشت کو تباہ کردیا، عوامی مسائل کا حل ہی حکومت کی کامیابی ہے۔ عارف علوی نے کہا کہ پاکستان پر غیرملکی اور اندرونی قرضوں کے پہاڑ کھڑے ہوچکے ہیں، سادگی کا فروغ نئے پاکستان کی شناخت ہے۔

انہوں نے کہا احتساب کا صاف و شفاف نظام انتہائی ضروری ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے قومی ورثے کی حفاظت کرنا ہوگی، نوجوانوں کو فنون لطیفہ کی طرف مائل کرنا ہوگا، ہمارے بچے ذہنی اور جسمانی طور پر کمزور ہیں، ہمارے مسائل سماجی ناہمواری اور غربت سے  جڑے ہوئے ہیں۔

عارف علوی نے کہا کہ حکومت کو نوجوانوں کیلئے میرٹ پر نوکریاں پیدا کرنی ہونگی اورملک میں تعلیم کو عام کرنا ہوگا۔

صدر عارف علوی کہتے ہیں کہ ہمیں بلوچستان کے علاقوں کی ترقی پر توجہ دینا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ نئی حکومت سے امید کرتا ہوں سوشل کنٹریکٹ کو لاگو کریں گے۔

معیشت کو سب سے بڑا مسئلہ گردانتے ہوئے صدر عارف علوی نے کہا کہ میرٹ اور قابلیت کی بنیاد پر مواقع پیدا کرنا ہونگے، ہمیں ملک میں آبادی اور وسائل میں توازن پیدا کرنا ہوگا ۔

انہوں نے کہا کہ ویمن امپاورمنٹ کے بغیر ملکی ترقی کا خواب مکمل نہیں ہوسکتا، ضرورت ہے کہ خواتین کو زیادہ سے زیادہ وسائل فراہم کیے جائیں، زچہ بچہ کی صحت اور چھوٹے کنبے کی افادیت کو اجاگر کریں۔

صدر عارف علوی نے کہا کہ آبپاشی کے جدید نظام کو فروغ دینا ہوگا، پانی اور اس سے متعلقہ مسائل پر بھی توجہ دینا ہوگی۔

عارف علوی نے کہا کہ خارجہ تعلقات کے نئے دور کا آغاز ہوچکا ہے، سی پیک منصوبوں کی مکمل حمایت کرتے ہیں، روس سے تعلقات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں، بھارت سے برابری کی بنیاد پر تعلقات چاہتے ہیں، دونوں ممالک کے تعلقات کیلیے مسئلہ کشمیر کا حل لازمی ہے۔

انہوں نے کہا کہ شجر کاری پر خصوصی توجہ دینا ہوگی نئے ڈیمز بھی بنانا ہوں گے، جبکہ ہمارے ہاں پانی کا بے دریغ استعمال ہورہا ہے، پانی کے بے جا استعمال پر قابو پانا ہوگا، پانی کو ضائع ہونے سے روکنے پر توجہ دینا ہوگی۔

صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان پر موسمیاتی تبدیلیوں کے بھی مضر اثرات مرتب ہورہے ہیں، توقع ہے حکومت ہر شعبے میں روڈ میپ مرتب کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے نیا پاکستان بنانے کا عزم کیا ہے، نئے پاکستان میں ہم سر اٹھا کر چل سکیں گے۔

وزیراعظم عمران خان، سندھ، پنجاب اور بلوچستان کے وزرائے اعلیٰ اور حکومت اور اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے اراکین بھی پارلیمنٹ میں موجود ہیں۔

اجلاس قرآن پاک کی تلاوت اور سے شروع ہوا۔ بعد میں نعت شریف پڑھی گئی۔

اس اجلاس کیلئے خصوصی پاس جاری کئے گئے تھے۔ صدر نے منگل کی صبح دس بجے قومی اسمبلی جبکہ اسی روز گیارہ بجے سینیٹ کا اجلاس بھی بلایا ہے۔

joint session of parliament

Dr Arif Alvi

Tabool ads will show in this div