سندھ میں 786 ماتمی جلوسوں کیلئے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کا فیصلہ

Sep 10, 2018

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/09/CM-IJLAS-ON-MOHARRAM-KHI-PKG-10-09.mp4"][/video]

محرم الحرام کے دوران سندھ میں 786 ماتمی جلوسوں نکالے جائیں گے، جن میں سے 11 حساس تین اور 312 حساس قرار دیئے گئے ہیں جبکہ عاشورہ کے دنوں میں 3513 مجالس کا اہتمام کیا جائے گا، 319 انتہائی حساس اور 1059 کو حساس کے درجے میں رکھا گیا ہے۔

وزيرِاعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت محرم الحرام کی سيکيورٹی سے متعلق اہم ترین اجلاس ہوا جس میں صوبائی وزراء سعید غنی، سید ناصر شاہ، وزیراعلیٰ کے مشیر مرتضیٰ وہاب، چیف سیکریٹری میجر (ر) اعظم سلیمان، ایڈیشنل آئی جی اسپیشل برانچ ڈاکٹر ولی اللہ دَل، ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر شیخ، سیکریٹری داخلہ قاضی کبیر، کمشنر کراچی صالح فاروقی دیگر اعلیٰ حکام سمیت مختلف اضلاع کے پولیس افسران نے ویڈیو کال کے ذریعے شرکت کی۔

اعلیٰ سطح کے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر شیخ نے بتایا کہ صوبے میں ایک ہزار 996 امام بارگاہیں ہیں، کراچی میں 356، حیدرآباد میں 590، میر پور خاص 118، شہید بے نظیر آباد 93، سکھر 374 اور لاڑکانہ ڈویژن میں 456 امام بارگاہیں ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ محرم الحرام کے دوران صوبہ بھر میں 3 ہزار 513 مجالس ہوں گے جن میں سے 319 کو انتہائی حساس، ایک ہزار 59 کو حساس اور 2 ہزار 135 مجالس عام قرار دیا ہے۔

امیر شیخ نے اجلاس کو بتایا کہ محرم الحرام کے دوران سندھ بھر میں 786 ماتمی جلوس نکالے جائیں گے، جن میں سے 11 انتہائی حساس، 312 حساس ہوں گے جبکہ 463 جلوسوں کو عام قرار دیا گیا ہے۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی کے مطابق عاشورہ کے دوران 69 ہزار 545 پولیس اہلکاروں کو حفاظتی ڈیوٹی پر مامور کیا جائے گا، کراچی میں 17 ہزار 558، حیدرآباد میں 16 ہزار 816، میر پور خاص میں 2 ہزار 237، شہید بے نظیر آباد میں 9 ہزار 280، سکھر میں 8 ہزار 253 اور لاڑکانہ ڈویژن میں 15 ہزار 401 پولیس اہلکار سیکیورٹی فرائض انجام دیں گے جبکہ 7 ہزار رینجرز اہلکار بھی سندھ بھر میں تعینات کئے جائیں گے۔

وزيرِاعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے محرم الحرام کے دوران سیکیورٹی کے سخت انتظامات کے ساتھ ساتھ سی سی ٹی وی کيمروں سے کڑی نگرانی کی ہدايت کردی۔

وزيراعلیٰ سندھ نے ہدايت کی کہ تمام کمشنرز، ڈی آئی جيز، ڈی سيز، ايس ايس پيز، 12 محرم تک اپنے اپنے علاقے نہيں چھوڑيں گے اور ضابطہ اخلاق کو نافذ کيا جائے گا۔

مراد علی شاہ نے کراچی میں اسٹریٹ کرائم پر برہمی کا اظہار کیا اور پولیس کو مجرمان کیخلاف بھرپور کارروائی کی ہدایت کی۔

MURAD ALI SHAH

Tabool ads will show in this div