مجھے تھپڑ مارکر دکھائیں، چیف جسٹس کی عمران شاہ کی سخت سرزنش

 

سپريم کورٹ کراچي رجسٹري ميں عمران علي شاہ تشدد از خود نوٹس کي سماعت  ہوئي ۔ چیف جسٹس نےعمران علي شاہ کي سخت سرزنش کي ہے۔انھوں نے کہاہےکہ میں سوموٹولےکرکسی پراحسان نہیں کرتا،اس طرح کےلوگ فرعون بن جاتےہیں،انکوسبق سکھاناچاہتاہوں۔ چیف جسٹس نے ڈاکٹرعمران علی شاہ کو ڈیم فنڈ میں 30 لاکھ روپے جمع کروانےکاحکم دیا۔

عمران علی شاہ تشدد ازخود نوٹس کی سماعت میں چیف جسٹس اور عمران علی شاہ کے درمیان مکالمہ ہوا۔ چیف جسٹس نے استفسار کیاکہ آپ نے کیا سوچ کرشہری کوتھپٹر مارا،کوئی جانور کو بھی اس طرح نہیں مارتا۔چیف جسٹس نے رکن سندھ اسمبلی عمران علي شاہ کی سخت سرزنش کی اور کہاکہ یہ ناقابل معافی جرم ہے، نہیں چھوڑیں گے۔ چیف جسٹس نےسخت لہجےمیں عمران علی شاہ کوکہاکہ میں باہر آتا ہوں، مجھے مار کر دکھائیں۔ انھوں نے ریمارکس دئیے کہ عمران شاہ عوامی نمائندےہیں،اس طرح تشددکریںگے۔

عمران علی شاہ نے اظہار ندامت کرتےہوئے کہاکہ سوری سر، میں شرمندہ ہوں۔ اس پر چیف جسٹس نے کہاکہ کیاسوری؟میں نےبچپن میں ملازم کوبیلٹ سےماراتھا۔میرےوالدنےبھی مجھےسبق سکھانےکیلئے2بارماراتھا۔عزت کاکوئی معاوضہ نہیں ہوتا۔چیف جسٹس کاکہناتھاکہ آپ کو بھی سر عام اسی طرح 4 تھپٹر مارے جائیں گے۔ چیف جسٹس نے داؤد چوہان سے پوچھا کہ آپ معاوضہ لےکربیٹھ گئے،معاف کیوں کیا؟ اس پر داؤد چوہان نے کہاکہ یہ میرےگھرپرچل کرنامزدگورنرکے ساتھ آئے تھے، اس لئے معاف کیا۔ متاثرہ شخص نے دوبارہ ڈاکٹرعمران کو اللہ کےنام پرمعاف کردیا۔ داؤد چوہان نے تجویز دی کہ عمران شاہ پرایک سال تک بڑی گاڑی چلانے پرپابندی عائدکی جائے۔اس پرچیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ یہ بڑی گاڑی کےبغیرنہیں رہ پائےگا۔

چیف جسٹس نے حکم دیاکہ عدالت میں ابھی وہ کلپ چلاتے ہیں اورسب کو دکھاتے ہیں۔ عمران شاہ کا ویڈیو کلپ چلانے کے لیے آلات کمرہ عدالت منگوائے گئے۔

پچھلے ماہ کراچی میں اسٹیڈیم روڈ پر پی ٹی آئی کے رکن سندھ اسمبلی ڈاکٹرعمران علی شاہ نے ایک شہری داؤد چوہان پر گاڑی ٹکرانے پر سرعام تھپٹر مارے تھے۔ پی ٹی آئی کی جانب سے عمران شاہ پر 5 لاکھ جرمانہ اور 20 مریضوں کے مفت علاج کی ہدایت کی گئی تھی۔ اس سے قبل عمران علی شاہ نے اس واقعے کے روز داؤد چوہان کے گھر جاکر معافی بھی مانگ لی تھی۔

chief justice of pakistan

Imran ali shah

Tabool ads will show in this div