ایڈزکےناسورسےبچاؤ کےلیےملک گیرآگاہی مہم شروع کی جائے،چیف جسٹس

سپریم کورٹ نے ايڈزسے متعلق کيس ميں سیکرٹری وزارت صحت کوپندرہ روز میں رپورٹ بہترکرکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔چيف جسٹس نےکہاہےکہ ايڈز ايک ناسور بن گيا۔اس سے بچاؤ کيلئےملک گير آگہی مہم شروع کي جائے ۔

سپريم کورٹ ميں جلال پور جٹاں ایڈزمریضاں کیس کی سماعت کے دوران سیکرٹری وزارت صحت نے رپورٹ جمع کرادی۔ جسٹس عمرعطابندیال نے رپورٹ پرعدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئےریمارکس دیئے کہ یہ رپورٹ توصرف کاغذ کا ضیاع ہے، سیکرٹری صاحب،پندرہ روزمیں رپورٹ بہترکرکے لائیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ بدقسمتي سے ايڈزایک ناسوربن گیا ہے،شوگر کی طرح اس کا بھی علاج نہیں،اس سے بچاؤ کی آگاہی مہم چلنی چاہئے۔ مہم کےلیےحکومت کو فنڈز مختص کرنےچاہیے۔

چيف جسٹس نے سیکرٹری وزارت صحت کورپورٹ بہترکرکے سپریم کورٹ میں جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ اگر رپورٹ مناسب نہ ہو ئی تو ایکشن بھی لیں گے۔ یہ نہیں ہوسکتا کہ انٹرنیٹ سےڈاؤن لوڈ کرکےرپورٹ پیش کردی جائے، کیس کی سماعت پندرہ روزکیلئے ملتوی کردی گئي۔

Tabool ads will show in this div