پسنی جیٹی کی بحالی گوادر سے منتخب ایم این اے اور ایم پی اے کی چینی حکام سے ملاقات

گوادر پورٹ کمپلکس میں پسنی جیٹی کی ڈریجنگ اور دوبارہ بحالی کے لئے  ایم این اے اسلم بھوتانی کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا، اجلاس میں چائنہ اورسیز پورٹ ہولڈنگ کمپنی کے زمہ داروں اور ایم پی اے گوادر میر حمل کلمتی بھی شرکت کی۔

 

 ڈائریکٹر فش ہاربر اتھارٹی پسنی  کے پروجیکٹ ڈائریکٹر نے پسنی جیٹی کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پسنی جیٹی کو کارآمد بنانے کیلیئے چائنہ کمپنی کے زریعے عنقریب ڈریجنگ کرائی جائے گی۔

 

اس موقع پر ایم این اے اسلم بھوتانی نے پسنی جیٹی کے پروجیکٹ ڈائریکٹر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جاپانی گرانٹ  سے حال ہی میں جیٹی کی ڈریجنگ پر 25 کروڑ روپے کی خطیر رقم خرچ کی جا چکی ہے مگر اس سے ماہیگیروں کو کچھ  فائدہ حاصل نہیں ہوا اور نا ہی جیٹی کی حالت کو بہتر بنایا جا سکا ہے۔

 

 انہوں نے کہا کہ پسنی جیٹی کی مکمل ڈریجنگ اور توسیع دوبارہ بحالی کے ساتھ پسنی میں نئی فش ہاربر جیٹی کا منصوبہ بھی زیر غور ہے، نئی جیٹی کی تعمیر پر2 بلین روپے سے زائد کی لاگت آئے گی جس کی منِظوری کیلیئے میں مرکزی حکومت سے بات کروں گا،جبکہ صوبائی سطح پر میر حمل کلمتی وزیر اعلی بلوچستان سے بات کریں گے.

 

 ایم این اے اسلم بھوتانی نے فش ہاربر کے افسران سے کہا کہ فش ہاربر پسنی کے پاس اس وقت پانچ سو ملین روپے کا بجٹ موجود ہے تو اس رقم کو جیٹی اور ماہگیروں کی بہتری کیلیئے استعمال میں لانا چاہیے گوادر میں چائنہ کے تین سو میگا واٹ بجلی گھر کے منصوبے پر جلد کام کا آغاز کیا جائیگا۔

   

واضع رہے کہ گزشتہ دنوں گوادر سے منتخب ایم این اے اسلم بھوتانی کی اسلام آباد میں چینی سفیر سے ملاقات ہوئی تھی جس میں گوادر کو درپیش مسائل  اور پسنی جیٹی کے حوالے سے بات ہوئی تھی جس پر چینی سفیر نے اسلم بھوتانی کو اپنے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی تھی۔

Makran

aslam bhootani

Tabool ads will show in this div