خاور مانیکا کی گاڑی روکنے پر ڈی پی او کا تبادلہ ، فياض الحسن چوہان کی تردید

خاور مانیکا کی گاڑی روکنے پر ڈی پی او پاکپتن کو ہٹانے کا مبینہ معاملہ پر آئی جی پنجاب کہتے ہیں ڈی پی او کا تبادلہ کسی دباؤ پر نہیں غلط بیانی کرنے پر کیا گیا۔

ڈي پي او پاکپتن رضوان گوندل کا تبادلہ کيا ہوا سوشل ميڈيا پر بھونچال مچ گيا، دعويٰ کيا گيا کہ پاک پتن ميں پوليس نے خاور مانيکا کي گاڑي کو روکا اور بشري بي بي کے سابق شوہر کي پوليس اہل کاروں سے تلخ کلامي ہوئي، ذرائع نے الزام لگايا کہ معافي نہ مانگنے پر ڈي پي او رضوان گوندل کا تبادلہ کر ديا گيا۔

پنجاب کے وزير اطلاعات نے الزامات کو مسترد کرديا فياض الحسن چوہان کے مطابق بني گالا يا پنجاب حکومت کاواقعے سے تعلق نہيں۔

فياض الحسن چوہان کاکہناتھا کہ مخالفين نے بات کوبڑھاچڑھا کرپيش کيا،آئي جي پنجاب نے بھي سوشل ميڈيا کي خبروں کو مسترد کرديا۔

ترجمان آئي جي کے مطابق رضوان گوندل کاتبادلہ کسي دباؤپرنہيں ہوا، انہيں غلط بياني پرتبديل کياگيا، ٹرانسفرآرڈرکو غلط رنگ دينے پرپوليس افسرکيخلاف تحقيقات کابھي حکم دياگيا ہے۔

PUNJAB POLICE

Khawar Manika

Tabool ads will show in this div