امریکا کاعمران خان کی افغانستان اوربھارت کےساتھ امن کی خواہش کاخیرمقدم

امریکی نائب معاون وزیر خارجہ ایلس ویلز کا کہنا ہے کہ پاکستان افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لائے یا واپس افغانستان دھکیلے اور پاکستان یقینی بنائے کہ طالبان وہاں محفوظ پناہ گاہوں کا مزہ نہ لیں۔

وسطي اور جنوبي ايشيا سے متعلق نائب امريکي وزير خارجہ ايلس ويلز نے بريفنگ ميں کہا ہے کہ افغانستان کے استحکام میں پاکستان کو اہم کردار ادا کرنا ہے۔ امریکی کی جانب سے ڈو مور کا مطالبہ نئے الفاظ ميں دہراتے ہوئے سخت الفاظ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لائے یا واپس افغانستان دھکیلے۔ ایلس ویلز نے امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے اگلے ماہ دورہ پاکستان کی تصدیق سے بھي گریز کيا۔

 

ایلس ویلز نے کہا کہ پاکستان کی نئی حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنے کے متمنی ہیں،افغانستان میں استحکام کو بڑھانے میں پاکستان کا اہم کردار ہے، وقت ہے کہ تمام فریق مذاکرات کی میز پر آئیں، ہم چاہتے ہیں پاکستان بھی اسی پیغام کو تقویت دے۔

 

انہوں نے کہا کہ ہم نے تشویش ظاہر کی ہے کہ دہشت گرد گروہ پاکستان میں محفوظ پناہ گاہیں انجوائے کر رہے ہیں، پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ان تنظیموں کے خلاف مزید کارروائی کرے۔

 

ایلس ویلز کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان تعلقات کی کوشش کی بھرپور حمایت کرتے ہیں، دونوں ممالک باہمی تعلقات بہتر بنانے کے لیے کئی ماہ سےکوشش کررہے ہیں، پاکستان اور افغانستان دونوں میں امن سے متعلق وزیراعظم عمران خان کی بات کا خیر مقدم کرتے ہیں، افغانستان کے استحکام میں پاکستان کو اہم کردار ادا کرنا ہے۔

 

امریکی وزیر خارجہ کے دورہ پاکستان سے متعلق ایلز ویلز کا کہنا تھا کہ پومپیوکے دورہ جنوبی ایشیا سے متعلق کوئی نیا اعلان نہیں، امریکی وزیر خارجہ 6 ستمبر کو بھارت سمیت خطے کا دورہ کریں گے۔

IMRAN KHAN

TALIBAN

ALICE WELLS

Tabool ads will show in this div