نیب کا حق نہیں لوگوں کی پگڑی اچھالے، چیف جسٹس

Aug 20, 2018
چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کہتے ہیں کہ نیب کا حق نہیں کہ لوگوں کی پگڑی اچھالے۔ کسی کے خلاف جرم ثابت ہونے تک معلومات باہر نہیں جانی چاہیے۔ نیب کی جانب سے لوگوں کی بے عزتی کرنے پر چیف جسٹس نے نوٹس لیا اور چیرمین نیب کو پیر کے لیے چیمبر میں ملاقات کے لیے طلب کر لیا۔ ملاقات 27 اگست کو چیف جسٹس کے چیمبر میں ہوگی۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مقدمے کی سماعت کے دوران، چیف جسٹس نے کہا کہ نیب کا حق نہیں کہ لوگوں کی پگڑی اچھالے۔ کوئی نیب کے دفتر جاتا ہے تو پہلے اسکے ٹکر چلنا شروع ہو جاتے ہیں۔ چیف جسٹس نے ڈی جی نیب سے استفسار کیا کہ کیا آپ چاہتے کہ انویسٹرز پاکستان سے بھاگ جائیں۔ کیا ایسا نہیں ہو رہا ہے۔ آپ ایسا کر رہے ہیں، بند کریں اس کلچر کو۔ چیف جسٹس نے کہا کہ نیب سے زیادہ انکو معلومات ہیں۔ انہوں نے زور دیا کہ کسی کے خلاف جرم ثابت ہونے تک معلومات باہر نہیں جانی چاہیے۔ جسٹس ثاقب نثار کہتے ہیں کہ سارا دن بلا کر بٹھا دیتے ہیں پھر بے عزتی کر کے بھیج دیتے ہیں۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ نوٹس کا علم بندے کو بعد میں ہوتا ہے ٹکر پہلے چلتے ہیں۔

CHIEF JUSTICE

NAB Chairman

Tabool ads will show in this div