سی پیک سے پہلے کا گوادر آج کے گوادرسے بہتر تھا،اسلم بھوتانی

لسبیلہ گوادر سے منتخب رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بھوتانی نے قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران کہا کہ گوادر آج  پتھروں کے زمانے کا منظر پیش کر رہا ہے،وہاں پانی، بجلی،گیس اور روزگارتک کی سہولیات میسر نہیں۔

رکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی نے نو منتخب وزیر اعظم عمران خان کو وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ نو منتخب وزیر اعظم کو ملک کے اس اہم حلقے کی جانب توجہ مرکوز رکھنی چاہیئے۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک کے حوالے سے لسبیلہ گوادر کا حلقہ سی پیک کا جھومر ہے،گوادر کے سمندر کی بدولت ہی ملک میں سی پیک کا منصوبہ آیا ہے،عمران خان سے بنی گالہ میں ملاقات اور حمایت کا یقین دلانے کے موقع پر ان کو اپنے حلقے کے مسائل بھی بتائے تھے۔

اسلم بھوتانی کا کہنا تھا کہ گوادر کا نام تو بڑا لیا جاتا ہے مگر آج وہ پتھروں کے زمانے کا منظر پیش کر رہا ہے،وہاں پانی بجلی اور روزگار کی سہولیات میسر نہیں،گوادر کے لوگوں کا روزگار ماہی گیری سے منسلک ہے مگر محکمہ فشریز کی ملی بھگت سے وہاں کے ماہی گیروں کا گزر بسر بھی مشکل سے ہو رہا ہے،بڑے ٹرالرز کے زریعے غیر قانونی فشنگ کی جارہی ہے،پاکستان نیوی کی پیٹرولنگ سے یہ غیر قانونی فشنگ روکی جاسکتی ہے۔

اپنی تقریر کے دوران انھون نے مزید کہا کہ سوئی سے جب گیس نکلی تو کہا گیا اب بلوچستان کی تقدیر بدلے گی مگر آج بھی سوئی میں لکڑیاں جلائی جاتی ہیں اب جب سی پیک آیا ہے تو یہی باتیں پھر دہرائی جا رہی ہیں،مگر سی پیک سے پہلے کا گوادر آج کے گوادرسے بہتر تھا،گوادر کو دوسرا سوئی نہیں بننے دوںگا۔

محمد اسلم بھوتانی کا کہنا تھا کہ ہم ترقی کے خلاف نہیں،ہم چاہتے ہیں کہ گوادر کے ساحل سے پوری دنیا فائدہ اُٹھائے لکین پہلا حق گوادر کے لوگوں کا ہے،نئی حکومت سے امید ہے کہ وہ بلوچستان کے ساحل اور اس کے مسائل پر توجہ دیں گے،اگر ان مسائل پر توجہ نہیں دی گئی تو وعدہ کرتا ہوں کہ گوادر کے ساحل سے کاروان کاشغر نہیں جائے گا ۔

انھوں نے سردار اختر مینگل کی تقریر کے دوران سرکاری ٹی وی کی جانب سے ان کے تقریر کے بلیک آؤٹ کی خبروں پر اسپیکر سے تحقیقات کا مطالبہ بھی کیا۔

PTI

IMRAN KHAN

aslam bhootani

Tabool ads will show in this div