عمران خان کا کڑے احتساب اور لوٹی گئی قومی دولت واپس لانے کا اعلان

Aug 17, 2018

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/08/Ptv-Pm-Imran-Khan-Speech-Parliament-17-08.mp4"][/video]

نو منتخب وزیراعظم نے کڑے احتساب اور لوٹی گئی دولت بیرون ملک سے واپس لانے کا اعلان کردیا، عمران خان کہتے ہیں کہ وہ تبدیلی لائیں گے جس کیلئے قوم ترس رہی تھی، وعدہ کرتا ہوں کسی ڈاکو کو این آر او نہیں دوں گا، الیکشن کمیشن کو ایسا ادارہ بنائیں گے کہ جیتنے اور ہارنے والے نتائج کو قبول کریں گے، دھاندلی کا شور مچانے والے الیکشن کمیشن اور سپریم کورٹ جائیں ہم مدد کریں گے، کسی کی بلیک میلنگ میں آیا ہوں نہ آؤں گا۔ پی ٹی آئی چیئرمین نے شہباز شریف اور فضل الرحمان کو ایک مہینہ دھرنا دینے کا چیلنج دے ڈالا۔

نومنتخب وزیراعظم عمران خان نے قومی اسمبلی میں اپنے پہلے خطاب میں کرپشن کیخلاف اعلان جنگ کردیا، کہتے ہیں کہ قومی دولت لوٹنے والے ڈاکوؤں کو نہیں چھوڑیں گے، سب سے پہلے کڑا احتساب ہوگا، لوٹی گئی قومی دولت بیرون ملک سے واپس لائیں گے، جو ہمارے بچوں کا پیسہ لوٹ کر باہر لے گئے اہیں پکڑیں گے، کسی ڈاکو کو کوئی این آر او نہیں دیں گے۔

مزید جانیے : عمران خان 22 برس جدوجہد کے بعد پاکستان کے 22 ویں وزیراعظم منتخب

انہوں نے کہا کہ میں آج اللہ تعالیٰ اور اپنی قوم کا شکریہ ادا کرتا ہوں، اللہ نے مجھے پاکستان میں تبدیلی لانے کا موقع دیا، وہ تبدیلی لائیں گے جس کیلئے قوم ترس رہی تھی، 22 سال کی جدوجہد سے یہاں پہنچا ہوں، مجھے کسی ڈکٹیٹر نے نہیں پالا، بطور وزیراعظم ہر ماہ دو بار اسمبلی میں اراکین کے سوالوں کا جواب دوں گا۔

عمران خان نے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں 4 حلقے کھولنے کا کہا، اگر ہماری بات مان لیتے تو الیکشن کا عمل شفاف ہو جاتا، چار حلقے کھولنے میں رکاوٹیں کھڑی کی گئیں، اس میں ڈھائی سال لگے، کرکٹ کی تاریخ کا پہلا کپتان ہوں جو نیوٹرل امپائر لے کر آیا، الیکشن کمیشن کو ایسا ادارہ بنائیں گے کہ جیتنے اور ہارنے والے نتائج کو قبول کریں گے۔

تفصیلات جانیں : شہباز شریف کا انتخابی دھاندلی پر کمیشن بنانے، تھرڈ پارٹی آڈٹ کا مطالبہ

پی ٹی آئی چیئرمین نے دھاندلی کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب اسمبلی کے 40 سے زائد حلقوں میں 3 ہزار سے بھی کم ووٹوں کے فرق سے ہارے، کسی نے ہماری مدد کی ہوتی تو کیا ایسا ہوتا، جو امیدوار الیکشن کمیشن یا سپریم کورٹ کے پاس جانا چاہتا ہے اس کی مدد کریں گے، کیوں کہ ہمیں پتہ ہے ہم نے دھاندلی نہیں کی۔

وہ بولے کہ کسی کی بلیک میلنگ میں آیا ہوں نہ آؤں گا، جتنا شور مچانا ہے مچائیں، سڑکوں پر نکلیں، دھرنا دینا ہے تو کنٹینر ہم دیں گے، ہم نے دھرنے میں 4 مہینے گزارے، شہباز شریف اور فضل الرحمان کو چیلنج دیتا ہوں کہ وہ ایک مہینہ گزار کر دکھائیں۔

نومنتخب وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 10 سال میں ملک کا قرضہ 6 ہزار سے 28 ہزار ارب تک پہنچ گیا، بچوں کی تعلیم، پینے کے پانی کا پیسہ جیبوں میں ڈالا گیا، نوجوانوں کو روزگار کیلئے بیرون ملک جانا نہیں پڑے گا، شور مچانے والوں کو یہ تک نہیں معلوم کس حلقے میں کیا ہوا۔

PM

IMRAN KHAN

ASIF ZARDARI

Tabool ads will show in this div