جسٹس شوکت عزیز نے جوڈیشل کونسل کے احکامات چیلنج کردیے

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے جوڈیشل کونسل کے احکامات سپریم کورٹ میں چیلنج کردیے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی کی جانب سے دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے اعلیٰ عدلیہ کے ججز کی رہائش گاہوں پر ہونے والے اخراجات کا ریکارڈ مانگا تھا اور شکایت کندگان کا کریمنل ریکارڈ منگوانے کی بھی درخواست دی۔ سپریم جوڈیشل کونسل نے تیس جولائی کو متفرق درخواستیں خارج کیں۔ انہوں نے درخواست میں کہا ہے کہ درخواستیں جلد بازی میں خارج کی گئیں۔ کونسل نے انصاف کے تقاضوں کے برعکس میری درخواستوں کو مسترد کیا۔ بطور شہری مجھے فئیرٹرائل کا حق ملنا چاہیے۔ درخواست میں سپریم کورٹ سے استدعا کی گئی ہے کہ جوڈیشل کونسل کے تیس جولائی کے احکامات کالعقدم قرار دیے جائیں اور متفرق درخواستوں پر کونسل کو متعلقہ ریکارڈ دینے کا حکم جاری کیا جائے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی پر سرکاری رہائش گاہ کی تزین وآرائش پر زیادہ پیسے لگانے کا الزام ہے ۔ ان کے خلاف ریفرنس سپریم جوڈیشل کونسل میں زیرسماعت ہے۔

ISLAMABAD HIGH COURT

justice Shaukat aziz siddiqui

Tabool ads will show in this div