اومنی گروپ سے علیحدہ ہوچکا ہوں، منی لانڈرنگ کیس کے ملزم انور مجید کا دعویٰ

سندھ منی لانڈرنگ اسکینڈل کے مرکزی ملزم انور مجید اور اُن کے بیٹے نے سپریم کورٹ سے ازخود نوٹس کارروائی روکنے کی استدعا کردی۔ کہتے ہیں خرابی صحت کے باعث اومنی گروپ سے علیحدہ ہوچکا ہوں۔

جعلی بینک اکاؤنٹس کیس ميں دلچسپ موڑ آگیا، عدالتی نوٹس کے بعد ملزم انور مجيد اومنی گروپ کی ذمہ داريوں سے لاتعلق  ہوگئے۔

سابق صدر آصف زرداری کے قریبی ساتھی انور مجید اور ان کے بیٹے عبدالغنی مجید نے جعلی بینک اکائونٹس کیس میں مشترکہ جواب سپریم کورٹ میں جمع کرادیا۔

عدالت سے ازخود نوٹس کارروائی اور ایف آئی اے کو اومنی گروپ کے اکاؤنٹس اور جائیدادیں قرق کرنے سے روکنے کی استدعا کردی۔

مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ ایف آئی اے عبوری چالان ٹرائل کورٹ میں جمع کرواچکا ہے، تحقيقاتی ادارے کو حتمی چالان جمع کرانے کا حکم ديا جائے۔

ملزم نے اپنا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ جائیداد اور اکاؤنٹ قرقی سے گروپ کا کاروبار تباہ ہورہا ہے، عدالتی آبزرویشن شفاف ٹرائل کا بنیادی حق متاثر کرسکتی ہے۔

جواب میں يہ بھی بتايا گيا کہ انور مجید بیماری کے باعث اومنی گروپ کی ایگزیکٹو ذمہ داریوں سے لاتعلق ہوچکے ہیں، خرابی صحت کے باوجود ان کیخلاف مقدمات درج کئے جارہے ہیں، اپنی بے گناہی ثابت کرنے کا موقع دیا جائے۔

ASIF ZARDARI

ANWAR MAJEED

Omni Group

Tabool ads will show in this div