الیکشن 2018،بلوچستان بھی اپ سیٹ کی زد میں

رپورٹ :ظہیر ظرف

عام انتخابات 2018 میں ملک بھر کی طرح بلوچستان میں بھی بڑے بڑے بُرج الٹ گئے،گو کہ یہاں بھی انتخابی نتائج کا اعلان روایتی تاخیر کا شکار ہےاور الیکشن کی شفافیت پر بھی مختلف پارٹیوں کی طرف سے انگلیاں اٹھائیں جارہی ہیں،مگر ان سب کے باوجود اب تک کے نتائج کے مطابق بلوچستان میں ہونے والے بڑے اپ سیٹ کچھ یوں ہیں۔

  پی بی 10 ڈیرہ بگٹی سے سابق وزیر داخلہ بلوچستان اور بلوچستان عوامی پارٹی کے سرکردہ رہنماؤں میں شامل میر سرفراز بگٹی اب تک کے غیر سرکاری اورغیر حتمی نتائج کے مطابق اپنی صوبائی اسمبلی کی نشست جمہوری وطن پارٹی کے نوابزادہ گہرام بگٹی سے دس ہزار کے بھاری مارجن سے ہارچکے ہیں۔

پی بی 2 ژوب سے مسلم لیگ ق کے صوبائی صدر جعفر خان مندوخیل جو کہ 25 سالوں سے مسلسل جیتتے چلے آرہے تھے ان کی جیت کو آزاد امیدوار مٹھا خان کاکڑ کی جانب سے بریک لگا دی گئی ہے اور یوں جعفر خان مندوخیل برسوں بعد اپنی آبائی نشست ہار گئےہیں

اسی طرح سابق حکومت کے اپوزیشن لیڈر رحیم زیارتوال بھی حلقے کے نسبتا غیر معروف نور محمد دمڑ کے ہاتھوں شکست سے دوچار ہوئے،نور محمد دمڑ نے بلوچستان عوامی پارٹی کے پلیٹ فارم سے 20600 ووٹ حاصل کیے جب کہ رحیم زیارت وال کی پوزیشن دوسری بھی نہیں بلکہ تیسری رہی کیونکہ دوسری پوزیشن ایم ایم اے کے مولوی محب اللہ کی رہی جنہوں نے 18900 ووٹ لیے۔

اس طرح بلوچستان عوامی پارٹی کے اہم رہنما نواب چینگیز مری کو بھی اپنے آبائی حلقہ کوہلو سے بھی شکست کی ہزیمت کا سامنا ہے ان کا مقابلہ انکے چھوٹے بھائی نوابزادہ گزین مری سے تھا مگر خلاف توقع دونوں بھائیوں کو پی ٹی آئی کے میر نصیب اللہ خان مری سے شکست ہوئی،نواب چنگیز مری نے الیکشن میں ووٹ کاسٹنگ کے دوران ہی ممکنہ شکست کو بھانپتے ہوئے الیکشن کا بائیکاٹ کیا تھا۔

اس طرح بلوچستان اسمبلی کے حلقےپی بی 3 قلعہ سیف اللہ کے مضبوط قلعہ سے نواب ایاز جوگیزئی کو بھی شکست کا سامنا کرنا پڑا جہاں ان کا مقابلہ ایم ایم اے کے حمایت یافتہ مولانا نور اللہ سے تھا ۔

اس طرح بلوچستان میں سیاست کے مہاویر سمجھے جانے والے نیشنل پارٹی کے سردار اسلم بزنجو، بلوچستان عوامی پارٹی کے سردار در محمد ناصر، پی پی پی کے میر صادق عمرانی،میر مجیب محمد حسنی اور بی این پی کے لشکری رئیسانی سمیت بڑے بڑے برج بھی عام انتخابات میں زمین بوس  ہوگئے ہیں جب کہ اس حوالے سے مزید اپ سیٹس ہونے کی توقع بھی کی جارہی ہے

PTI

NATIONAL PARTY

Election 2018

BAP

BNP Mengal

upsets in balochistan

Tabool ads will show in this div