Uncategorized

الیکشن 2018 ، بلوچستان کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج

الیکشن کمیشن کی جانب سے غیر سرکاری نتائج جاری کئے جارہے ہیں، حتمی نتائج کا اعلان بعد چند روز بعد کیا جائے گا۔

دکی پی بی 5 سے  آزاد امیدوار سردار مسعود لونی 13322 ووٹ لیکر کامیاب رہے جب کہ ان کے مد مقابل بلوچستان عوامی پارٹی کے سردار در محمد ناصر 6887ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں

 واشک  پی بی 41 سے غیر حتمی نتائج کے مطابق ، متحدہ مجلس عمل کے نامزاد امیدوار  زابد ریکی 14131 ووٹوں کے ساتھ پہلے جبکہ میر مجیب الرحمن محمد حسنی 11050 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں ۔

حلقہ پی بی 12 نصیرآباد2 سےسرکاری نتائج کے مطابق بی اے پی حاجی محمد خان لہڑی نے5985 ووٹ لیکر جیت گئےہیں

حلقہ پی بی  11 نصیر آباد ون میں سرکاری  نتائج کے مطابق بی اے پی کے سکندر علی عمرانی نے 10007ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے جبکہ پی پی پی کے میر صادق عمرانی نے 6901 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر رہے

پی بی 29 کوئٹہ سے بلوچستان نیشنل پارٹی کے اختر حسین لانگو 12603 ووٹ لیکر کامیاب تحریک انصاف کے عبدالباری بڑیچ 6657 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر بلوچستان عوامی پارٹی کے بانی سعید احمد ہاشمی کو شکست ہوئی انھوں نے 4927 ووٹ حاصل کئےپی بی 32 کوئٹہ بلوچستان نیشنل پارٹی کے ملک نصیر شاہوانی 6795 ووٹ لیکر کامیاب متحدہ مجلس عمل کے مولانا عبدالغفور حیدری 4434 ووٹ لیکر دوسرے نمبرپر ہیں

 لورالائی۔ پی بی 4 کے آر او نے غیر حتمی سرکاری نوٹیفیکیشن جاری کردیا۔ حاجی محمد خان طور (بی اے پی )  13460 لے کر مولانا فیض اللہ (ایم ایم اے) 11962کو1499 ووٹ کی اکثریت سے شکست دے کریہ سیٹ جیت گئے ہیں پی بی 28 کوئٹہ: تحریک انصاف کے مبین خلجی 7 ہزار 226 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے، بلوچستان عوامی پارٹی کے طاہر محمود 5 ہزار 640 ووٹ لیکر دوسرے اور بی این پی کے اسماعیل گجر نے 4 ہزار 275 کے ساتھ تیسری پوزیشن لی۔ پی بی 16 جھل مگسی: بلوچستان عوامی پارٹی کے نوابزادہ طارق مگسی حتمی نتائج کے بعد 14 ہزار 959 ووٹ لے کر رکن بلوچستان اسمبلی منتخب ہوگئے، جبکہ ان کے مد مقابل آزاد امیدوار اورنگزیب عالمگیر کو 6 ہزار 402 ووٹ ملے۔

پی بی 50 لسبیلہ 2: بلوچستان عوامی پارٹی کے سربراہ جام کمال خان 38 ہزار 885 ووٹ حاصل کرکے سرکاری نتائج کے مطابق کامیاب قرار پائے، ان کے مد مقابل آزاد امیدوار نصرﷲ رونجھو 26 ہزار 50 ووٹ حاصل کرسکے۔ پی بی 4 لورالائی: غیر حتمی سرکاری نوٹیفیکیشن جاری، حاجی بی اے پی کے محمد خان طور 13 ہزار 460 لے کر کامیاب ہوگئے، ایم ایم اے کے مولانا فیض اللہ کو 11 ہزار 962 ووٹ ملے۔ پی بی 13 جعفر آباد : پی ٹی آئی کے میر عمر خان جمالی نے 18 ہزار 922 ووٹ لیکر کامیابی حاصل کرلی، آزاد امیدوار راحت فائق جمالی نے 17 ہزار 845 ووٹ حاصل کئے۔ پی بی 14 جعفر آباد : بلوچستان عوامی پارٹی کے جان محمد جمالی 20 ہزار 588 ووٹ لیکر رکن بلوچستان اسمبلی بن گئے، آزاد امیدوار نور جہان میمن کو 2700 ووٹ ملے۔ پی بی 15 صحبت پور: بی اے پی کے سلیم خان کھوسہ نے 17 ہزار 298 ووٹ لے کر کامیابی حاصل کرلی، نیشنل پارٹی کے دوران خان کھوسہ نے 8 ہزار 836 ووٹ لئے۔ پی بی 21 قلعہ عبداللہ کے کل 69 پولنگ مراکز کا نتیجہ عوامی نشنل پارٹی کا زمرک خان اچکزِئی نے 9600 ووٹ لیکر کامیاب رھےچمن .ایم ایم اے کا حبیب اللہ نے 6200 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پررہے پی بی 16 جھل مگسی: بلوچستان عوامی پارٹی کے نوابزادہ طارق مگسی حتمی نتائج کے بعد 14 ہزار 959 ووٹ لے کر رکن بلوچستان اسمبلی منتخب ہوگئے، جبکہ ان کے مد مقابل آزاد امیدوار اورنگزیب عالمگیر کو 6 ہزار 402 ووٹ ملے۔ پی بی 18 پشین : متحدہ مجلس عمل کے عبدالواحد صدیقی 23 ہزار 790 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے، بلوچستان عوامی پارٹی کے اسفندیار خان کاکڑ 14 ہزار 880 ووٹ لے سکے۔ پی بی 19 پشین : متحدہ مجلس عمل پاکستان نے کامیابی حاصل کرلی، اصغر ترین 14 ہزار 378 ووٹ لیکر رکن بلوچستان اسمبلی منتخب ہوگئے، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سردار مصطفیٰ ترین 10 ہزار 760 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی بی 20 پشین : متحدہ مجلس عمل نے یہاں بھی کامیابی حاصل کرلی، سید فضل آغا 17 ہزار 851 ووٹ لیکر ایم پی اے بن گئے، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سید لیاقت آغا 11 ہزار 74 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی بی 28 کوئٹہ: تحریک انصاف کے مبین خلجی 7 ہزار 226 ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے، بلوچستان عوامی پارٹی کے طاہر محمود 5 ہزار 640 ووٹ لیکر دوسرے اور بی این پی کے اسماعیل گجر نے 4 ہزار 275 کے ساتھ تیسری پوزیشن لی۔

نوٹ : الیکشن کمیشن کی جانب سے نتائج موصول ہونے کا سلسلہ جاری ہے، جو اپ ڈیٹ کئے جارہے ہیں۔

Election 2018

Eelection Commission

Tabool ads will show in this div